لبنان :فلسطینی پناہ گزین کیمپ میں تصادم،2ہلاک، متعدد زخمی

لبنان :فلسطینی پناہ گزین کیمپ میں تصادم،2ہلاک، متعدد زخمی

بیروت(اے این این)لبنان میں فلسطینی پناہ گزین کیمپ عین الحلوہ میں جوائنٹ سیکیورٹی فورسز اور ایک منحرف گروپ کے درمیان تصادم میں کم سے کم 2 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق گزشتہ روز علی الصباح ایک اشتہاری بلال العرقوب گروپ اور جوائنٹ فورسز کے درمیان تصادم ہوا۔ فائرنگ کے نتیجے میں دو افراد ہلاک ہوگئے۔ ہلاک ہونے والے ایک شخص کا تعلق بلال العرقوب گروپ سے ہے جس کی شناخت عبیدہ العرقوب کے نام سے کی گئی ہے۔ جب کہ جوابی فائرنگ میں جوائنٹ فور کا ایک اہلکار بھی جاں بحق ہوا ہے۔ عین الحلوہ پناہ گزین کیمپ میں جوائنٹ فورسز اور شدت پسند گروپ کے درمیان ہونے والی فائرنگ میں دو افراد ہلاک اور 9 زخمی ہوئے ہیں۔ ہلاک ہونے والے ایک شخص کی شناخت عبیدہ العرقوب کے نام سے کی گئی ہے۔لبنانی خبر رساں ایجنسی کے مطابق عین الحلوہ کیمپ میں دونوں گروپوں نے ایک دوسرے پر راکٹوں سے حملے کئے ہیں۔ کشیدگی کے باعث شہری اپنے گھروں سے محفوظ مقامات پر منتقل ہونا شروع ہوگئے ہیں۔

تنظیم کی جنرل سیکریٹری ناہیدہ نسرین نے کہا کہ دوسرا پی ایس اے ایسے وقت لگایا گیا جب کہ آسیہ باجی کی صحت بہت بگڑ چکی ہے ۔ ایک بیمار خاتون رہنما کے خلاف حکومت انتہائی معاندانہ اور ظالمانہ رویہ اختیار کئے ہوئے ہیں ۔ کیا یہ بات اس سے ثابت نہیں ہو جاتی کہ کٹھ پتلی حکومت اس خاندان کو عتاب کا نشانہ بنا رہی ہیں کیونکہ یہ بھارتی جابرانہ قبضہ کے مخالف ہیں ۔ اس سے بدتر سیاسی عناد کی۔کیا مثال ہوگی۔نسرین نے کہاکہ ریاست کی عدالتیں بھی بھارتی حکومت اور اس کے مقامی گماشتوں کے اشاروں پر چلتی ہیں ۔ پچھلے تین ماہ سے عدالتیں اندرابی صاحبہ اور ان کی معتمد خاص صوفی فہمیدہ کو کشمیر کی جیل منتقل بھی نہیں کروا پائی جبکہ سپریم کورٹ کی ہدایات ہے کہ قیدیوں کو اپنے گھر کے نزدیک کی جیلوں میں قید رکھا جانا چاہئے ۔انہوں نے کہ آسیہ باجی کے ساتھ ساتھ ان کے شوہر ڈاکٹر قاسم فکتو کو بھی ان کے سیاسی موقف کی بنا پر عتاب کا نشانہ بنایا جارہا ہے ۔ ان کی صحت بھی کافی بگڑ گئی ہے ۔ ان کی بینائی بہت زیادہ متاثر ہوگئی ہے اور ان کی آنتوں میں بھی زخم پیدا ہوگئے ہیں ۔بھارتی قانون کے مطابق تا عمر سزا کی مدت متعین ہیں لیکن ڈاکٹر قاسم کے معاملہ میں اس سزا کے معنی بدل دئے گئے اور اب کہا جارہا ہے کہ ڈاکٹر قاسم کو جیل کے اندر ہی مرنا ہوگا۔ یہ فیصلہ ثابت کرتا ہے کہ یہ سیاسی عناد کے بغیر کچھ بھی نہیں ۔نسرین نے کہا کہ یہ تحریک اور اس خاندان کیخلاف مکروہ سازش ہے۔یہ بھارت کا وطیرہ رہا ہے کہ جو اشخاص ان کے سامنے نہیں جکڑے انہیں یا تو پھانسی پر چڑھا دیا جاتا ہے ورنہ جیلوں کی زینت بنا دیا جاتا ہے۔دریں اثنا نسرین نے کہاکہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ گریز میں جو جھڑپ ہوئی وہ فرضی تھی ۔خونخوار بھارتی فوج کشمیریوں کو مارنے کا کوئی موقع نہیں چھوڑ رہی ۔یہ فوج گھروں سے کشمیریوں کو گرفتار کر کے انہیں فرضی جھڑپوں میں مار کر مجاہد قرار دے دیتی ہے۔ انہوں نے گریز میں شہید ہوئے نوجوانوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ چاہے یہ مجاہدین ہو یا عام شہری ان کہ قربانی کبھی ضائع نہیں ہوگی اور بھارت کے غاصبانہ قبضہ کا اختتام ہو کر ہی رہے گا۔

یورپ میں چاقو گھوپنے اور دہشت گرد حملوں سے متعلق بدستور ہائی الرٹ ہے۔ اس ہفتے کے دوران دو دہشت گرد حملے رپورٹ ہو چکے ہیں جن میں سے سب سے بڑا حملہ بارسلونا میں ہوا جس میں مشتبہ افراد نے راہگیروں پر ویگن چڑھا کر کم ازکم 14 افراد کو ہلاک اور 100 سے زیادہ کو زخمی کر د۔

مزید : عالمی منظر