15 اگست کی رات بھارت کی سکیورٹی فورسز کے کشمیریوں کے گھروں پر چھاپے، سینکڑوں خواتین کے ساتھ دست درازی: رپورٹ

15 اگست کی رات بھارت کی سکیورٹی فورسز کے کشمیریوں کے گھروں پر چھاپے، سینکڑوں ...
15 اگست کی رات بھارت کی سکیورٹی فورسز کے کشمیریوں کے گھروں پر چھاپے، سینکڑوں خواتین کے ساتھ دست درازی: رپورٹ

  


سرینگر (ڈیلی پاکستان آن لائن) مقبوضہ کشمیر میں مودی سرکار کے مظالم کا بھانڈا ایک بھارتی گروپ نے ہی پھوڑ دیا۔ گروپ کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ بھارت کے یوم آزادی کی رات کو کشمیر میں گھروں پر چھاپے مار کر سینکڑوں خواتین اور کم عمر لڑکیوں پر دست درازی کی گئی۔

انسانی حقوق کیلئے کام کرنے والے بھارتی گروپ نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ گزشتہ 2 ہفتوں کے دوران بھارتی سکیورٹی فورسز نے مقبوضہ وادی میں سینکڑوں خواتین اور لڑکیوں پر دست درازی کی ہے۔ صرف 15 اگست کی رات کو کشمیریوں کے گھروں پر چھاپوں کے دوران دست درازی کے سینکڑوں واقعات پیش آئے۔

مذکورہ گروپ نے مقبوضہ وادی میں متاثرین سے گفتگو کے بعد اپنی رپورٹ تیار کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ تمام متاثرین کیمرہ کے سامنے بات چیت سے ڈری ہوئی تھیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سکیورٹی فورسز کی طرف سے چھاپوں کے دوران سینکڑوں نوجوانوں کو گرفتار بھی کیا گیا ہے۔

مقبوضہ جموں کشمیر کے مجسٹریٹ کا کہنا ہے کہ بھارتی فیصلے کے خلاف وادی میں سخت احتجاج کو روکنے کیلئے گرفتاریاں کی گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ وادی کی جیلوں میں جگہ کم پڑنے پر زیادہ تر افراد کو جموں و کشمیر سے باہر قید میں رکھا گیا ہے۔

خیال رہے کہ اتوار کے روز غیر ملکی خبر ایجنسی نے اپنی رپورٹ میں بتایا تھا کہ مقبوضہ وادی میں 4 ہزار نوجوانوں کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ اتنی بڑی تعداد میں ہونے والی گرفتاریوں کے باعث مقبوضہ وادی کی جیلوں میں جگہ کم پڑ گئی ہے اور گرفتار افراد کو ریاست سے باہر حراستی مراکز میں رکھا گیا ہے۔

مزید : علاقائی /آزاد کشمیر /مظفرآباد


loading...