آئل ریفائنریز اور گیس کمپنیوں نے 1کھرب سے زائد کے بقایا جات دبالئے 

      آئل ریفائنریز اور گیس کمپنیوں نے 1کھرب سے زائد کے بقایا جات دبالئے 

  

 اسلام آباد(آن لائن) پبلک اکاؤنٹس کی سب کمیٹی نے آئیل ریفائنریز اور گیس کمپنیوں کے ذمے اربوں روپے کے بقایاجات کی وصولی کیلئے او جی ڈی سی ایل حکام کو اپنی کوششیں تیز کرنے کی ہدایت کردی،کمیٹی نے کمپنیوں کے ذمہ لیٹ پے منٹ سرچارج کی مد میں بقایاجات کی وصولی کیلئے طریقہ کار بنانے، مختلف عدالتوں میں طویل عرصے سے زیر التو کیسز پر بھی اپنے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے آئل کمپنیوں کواقدامات کرنے کی ہدایت کی ہے۔سب کمیٹی کا اجلاس کنوینرمنزہ حسن کی سربراہی میں پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا جس میں او جی ڈی سی ایل کے مالی سال2014-15کے آڈٹ اعتراضات کا جائزہ لیا گیا۔ آڈٹ حکام نے بتایاکہ گردشی قرضوں کی مد میں مختلف آئیل ریفائنریز اور گیس کمپنیوں کے ذمے 1کھرب سے زائد کے بقایا جات ہیں جس میں تجارتی خسارہ بھی شامل ہے جبکہ اب تک 81ارب 74کروڑ روپے سے زائد وصول کئے جاچکے ہیں جبکہ 18ارب 77کروڑ روپے کی وصولی پر کام جاری ہے۔ 17ارب روپے سوئی سدرن گیس کے ذمے بقایا ہیں، اوچھ پاور کے ذمے 74کروڑ روپے سے زائد بقایا جات، سیلز ٹیکس پر کیپیسٹی چارجز کی وجہ سے بقایا ہیں۔کمیٹی نے بائیکو کمپنی کے ذمے 32کروڑ 45لاکھ روپے سے زائد کے بقایا جات پر حکام کو ہدایت کی کہ اس کمپنی سے جلد از جلد وصولی کی جائے۔کمیٹی کو بتایا گیا کہ ڈائریکٹر جنرل پٹرولیم کنسیشن نے تیل و گیس تلاش کرنے والی 12کمپنیوں جنہوں نے معاہدے کے مطابق اپنا کام مکمل نہیں کیا ہے، 8کمپنیوں کے لائسنس کینسل کر دئیے گئے ہیں۔ بعض کمپنیوں کے ساتھ کیسز عدالتوں میں زیر التوا ہیں جبکہ نیب نے بھی معاملے کی انکوائری کی ہے۔ کنوینر نے نیب حکام کو ہدایت کی کہ انکوائری کی ابتدائی رپورٹ 15دنوں میں پیش کریں۔ عدالت میں زیر التوا کیسز کو مکمل طریقے سے پرسو کیا جائے۔ کمیٹی کو بتایاگیا کہ سوئی سدرن گیس کمپنی سے لیٹ پے منٹ سرچارج کی مد میں 4 ارب 67 کروڑ روپے سے زائد کی ریکوری نہیں کی ہے جس پر حکام نے بتایاکہ پرنسپل اماونٹ کی ریکوری ہوچکی ہے تاہم لیٹ پے منٹ سرچارج کی ریکورٹی ابھی تک نہیں ہوئی ہے۔لیٹ پے منٹ سرچارج کی مد میں اس وقت مختلف کمپنیوں کے ذمے 1 کھرب روپے سے زائد کے بقایا جات ہیں۔کمیٹی نے کہاکہ اگر یہ رقم وصول نہیں کی جاسکتی تو اس کو ختم کیا جائے۔

بقایاجات 

مزید :

صفحہ آخر -