بلوچستان کے امن و امان  میں خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دی جائے گی،ترجمان ایف سی 

  بلوچستان کے امن و امان  میں خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دی جائے گی،ترجمان ایف ...

  

 کوئٹہ(آئی این پی) ترجمان ایف سی بلوچستان کے جا ری کر دہ پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ 13اگست کو ابسر کے مقام پر تربت میں ایک افسوسناک واقعہ پیش آیا۔ جس میں دہشت گردوں نے ایف سی کے کانوائے کو IEDسے نشانہ بنایااور ایف سی کے ایک صوبیدار سمیت 3اہلکار شدید زخمی ہو گئے۔حملہ کے موقع پر تفتیش کے سلسلے میں علاقے میں موجود افراد بشمول حیات بلوچ سے پوچھ گیچھ جا رہی تھی کہ ایک اہلکار نائیک شادی اللہ نے انتہائی غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے فائر کھول دیاجس کے نتیجے میں نوجوان طالب علم حیات بلوچ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی دم توڑ گیا۔اس غیر متوقع رویے  سے نمٹنے کے لیے موقع پر موجود ایف سی جوانوں نے ملزم پر قابو پا کر اسکا ہتھیار قبضے میں لے لیا۔بنیادی محکمانہ تفتیش موصول ہونے پر IGFC نے فوری طور پر ملزم کو پولیس کے حوالے کرنے کے احکامات جاری کر دیئے۔جہاں تک ایف سی کی بحیثیت ادارہ مخلصانہ سوچ کا تعلق ہے اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ واقعے کے 2 گھنٹے کے اندر اندر ملزم کو پولیس کی نامزدگی سے پہلے خود ایف سی نے حکام کے حوالے کردیا۔ جس کا علاقے کے عمائدین نے بھی خیر مقدم کیا۔ فرد یا دہشت گرد تنظیم کو بلوچستان کے امن و امان میں خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور ایف سی بلوچستان کی ان گنت اور لازوال قربانیوں کو رائیگاں نہیں ہونے دیا جائے گا۔

ترجمان ایف سی  

مزید :

صفحہ آخر -