ضلع اورکزئی لینڈ اونرز اورٹیچرز ایسوسی ایشن کا مظاہرہ

ضلع اورکزئی لینڈ اونرز اورٹیچرز ایسوسی ایشن کا مظاہرہ

  

ہنگو(بیورورپورٹ)ضلع اورکزئی لینڈ اونرز ایسو سی ایشن اور ٹیچر ایسو سی ایشن کا ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افیسر نہ ہونے اور منظور شدہ 616پوسٹوں پر بھرتیاں نہ ہونے کے خلاف اورکزئی ایجوکیشن دفتر کے سامنے مشترکہ احتجاجی مظاہرہ کیا یکم ستمبر سے پہلے پہلے ڈی ای او کو تعینا ت کیاجائے یا ان کے اختیارات ڈ ی ڈی او کو دیاجائے یا کوہاٹ ضلع کے ڈی ای او کو ڈول چار دیا جائے تاکہ یکم ستمبر سے پہلے پہلے بھرتیاں ممکن ہو سکے اور ضلع اورکزئی اساتذہ کا ٹرانسفر اور پوسٹنگ کا مسئلہ حل ہو جائے اور محکمہ تعلیم کے تمام ہوا میں لٹکے ہوئے مسائل حل ہو جائے اگر ہمارے ان مطالبات کو نہیں مانا گیا تو ہم سڑکوں پر احتجاج کرنے پر مجبور ہونگے ان خیالات کا اظہار حاجی عبدالمالک،ملک سید حبیب،ملک نور جعف،ملک جاوید،ملک خوشحال خان  ضلع اورکزئی ٹیچر ایسوسی ایشن کے صدر حاجی فیروز خان کی قیادت میں ضلع اورکزئی کے ایجوکیشن دفتر کے سامنے اساتذہ لینڈ اونر ملکان اور کلاس فور ملازمین کے مشترکہ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے مظاہرین نے کہاکہ انہوں نے کہاکہ گزشتہ چار ماہ سے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افیسر ضلع اورکزئی سخت بیمار ہے جوکہ دفتر انے کے قابل نہیں اس کی جگہ پر ابھی تک کسی کونہ قائم مقام ڈی ای او بنایاگیاہے اور نہ کسی کو اختیارات دئے گئے ہیں اورکزئی افس میں ڈی ڈی او سیف اللہ خان ہے مگر ان کے پاس بھی دستخط کرنے یا دیگر امور نمٹانے کے اختیارات نہیں ہے جس کی وجہ سے جنوری 2020میں منظور شدہ 616نئی پوسٹو ں پر بھرتیاں نہیں ہو رہی اس کے ساتھ ساتھ ضلع اورکزئی میں اساتذہ کے ٹرانسفر پوسٹنگ کا سلسلہ بھی بند ہے اور محکمہ ایجوکیشن سے منسلک تمام مسائل ہوا میں لٹکے ہوئے ہیں انہوں نے کہاکہ دیگر ضم شدہ قبائلی اضلاع میں پہلی ہی تمام منظور شدہ پوسٹوں کی بھرتیاں ہو چکی ہیں بدقسمتی سے ڈی ای او نہ ہونے کی وجہ سے ضلع اورکزئی میں بھرتیاں نہیں ہوئی ہیں مظاہرین کا کہنا تھا کہ خدشہ ہے کہ یکم ستمبر سے نئی بھرتیوں پر پابندی لگ جائے جوکہ ہمارے ساتھ سراسر ظلم اور زیادتی ہوگی انہوں نے وزیر اعلی خیبر پختونخواہ صوبائی وزیر تعلیم  چیف سیکرٹری  منتخب عوامی نمائندوں کمشنر کوہاٹ سیکرٹری ایجوکیشن  ڈی جی ایجوکیشن ڈی سی ضلع اورکزئی سے مطالبہ کیاہے کہ اگر یکم ستمبر سے پہلے پہلے ڈی ای او تعینات نہیں کیاگیا یا ان کے اختیارات ڈی ڈی او کو نہیں دئے گئے یا ضلع کوہاٹ کے ڈی ای او ڈول چارج نہیں دیاگیا تاکہ ہمارے نئے پوسٹو ں پر بھرتیاں ممکن ہو سکے بصورت دیگر ہم سڑکوں پر شدید احتجاج کرنے پر مجبور ہونگے اور ضلع اورکزئی میں تمام تعلیمی اداروں میں تالہ بند ہڑتال کرنے پر بھی مجبورہونگے مظاہرین نے کہاکہ ہم نے بار بار متعلقہ حکام کو درخواستیں دی ان کے ساتھ ملاقاتیں کی بار بار یقین دہانیوں کے باوجود ہمارا یہ حل طلب مسئلہ حل نہیں ہورہا انہوں نے کہاکہ ہمارے ان دیرینہ مطالبات کو یکم ستمبر سے پہلے پہلے پورا کیاجائے اگر بھرتیوں پر بین لگ گیا تو حالات کی خرابی کی ذمہ داری ضلعی انتظامیہ اور حکومت پر عائد ہوگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -