دعوے فلاپ،یوٹیلیٹی سٹورز سے اہم اشیاء غائب،شہری مایوس

   دعوے فلاپ،یوٹیلیٹی سٹورز سے اہم اشیاء غائب،شہری مایوس

  

 مظفرگڑھ (نامہ نگار)مظفرگڑھ  میں چینی کابحران شدت اختیار کرگیا حکومتی احکامات کے باوجود ضلعی انتظامیہ شہریوں کو70روپے فی کلو چینی فراہم کرنے میں ناکام ھو چکی ھے مظفرگڑھ شہر سمیت ضلع بھر کی مارکیٹوں میں چینی 95 سے 105 روپے فی کلو فروخت کی جا رھی ھے انتظامیہ نے شہر میں چند پوائنٹس قائم کئے ھیں جہاں  شہریوں کو 70 روپے کلو چینی فراھم کی (بقیہ نمبر57صفحہ7پر)

جارھی ھے لیکن اس کیلئے شناختی کارڈ کی کاپی دینا لازمی ھے جس کی وجہ سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا ھے ارشد،نصیر،رحمان،عمران اور متعدد دیگر شہریوں نے کہا ھے کہ 70 روپے کلو چینی لینے کیلئے 10 روپے شناختی کارڈ کی فوٹو کاپی کرانے پر خرچ ھو جاتے ھیں اور اس طرح  انھیں چینی 80 روپے کلو میں ھی پڑتی ھے انھوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ھے کہ چند پواینٹس کی بجائے تمام مارکیٹوں اور بازاروں میں چینی کی 70 روپے کلو کے حساب سے فراھمی یقینی بنائی جائے۔

جتوئی شہر کے شہری محمد قیوم محمد آصف محمد عبداللہ محمد قاسم محمد امجد محمد فیصل محمد مظہر محمد اظہر ریاض حسین وادی کا صحافیوں  سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ جتوئی شہر کے تمام  یوٹیلٹی اسٹورز پر ضروریات زندگی کی اشیاء نایاب ہوچکی ہے یوٹیلٹی اسٹورز پر آٹا، چینی، دالیں، چاول دستیاب نہیں ہے یوٹیلٹی اسٹورز پر دودن بعد آٹے کے پچاس تھیلے آتے ہیں اور فورا ختم ہوجاتے ہیں اور وہ اتنی بڑی آبادی کے لیے پچاس آٹے کے تھیلے انتہائی ناکافی ہے انہوں نے یہ بھی کہا کہ کئی کئی روز ضروریات زندگی کی اشیائجن میں خاص طور پر آٹا اور چینی دستیاب نہیں ہوتی ہے حکومت یوٹیلٹی اسٹورز کے ذریعے غریب  عوام کو ریلیف دینے میں  ناکام ہوچکی ہے  شہری نے  حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ یوٹیلٹی اسٹورز کی بجائے ضروریات زندگی کی اشیائی  کی فراہمی عام کریانہ اسٹورز پر فراہم کرے اور عوام کو ریلیف دے۔

سٹور خالی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -