’ماسک پہننا نقصان دہ بھی ہوسکتا ہے‘ سویڈن کے کورونا وائرس ایکسپرٹ نے وارننگ دے دی، حیران کن وجہ بتادی

’ماسک پہننا نقصان دہ بھی ہوسکتا ہے‘ سویڈن کے کورونا وائرس ایکسپرٹ نے وارننگ ...
’ماسک پہننا نقصان دہ بھی ہوسکتا ہے‘ سویڈن کے کورونا وائرس ایکسپرٹ نے وارننگ دے دی، حیران کن وجہ بتادی

  

سٹاک ہوم(مانیٹرنگ ڈیسک) فیس ماسک کے بارے میں کہا جا رہا تھا کہ اسے پہننے سے انسان کے جسم میں آکسیجن کا لیول کم ہو جاتا ہے اور دیگر کچھ نقصانات پہنچتے ہیں۔ یہ نقصانات تو ماہرین نے گزشتہ تحقیقات میں غلط ثابت کر دیئے تاہم اب سویڈن کے وبائی امراض کے ایک ماہر نے فیس ماسکس کا ایک ایسا نقصان بتا دیا ہے جو کسی کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا۔ میل آن لائن کے مطابق ڈاکٹر اینڈریس ٹیگ نیل نامی اس ماہر کا کہنا ہے کہ فیس ماسکس کا ایک نقصان یہ ہے کہ اسے پہننے کے بعد لوگ مطمئن ہو جاتے ہیں کہ اب انہیں وائرس لاحق نہیں ہو گا او روہ بے فکری کے ساتھ پبلک ٹرانسپورٹ اور بھیڑ والی دیگر جگہوں پر بے احتیاطی کرتے پھرتے ہیں، جس کے نتیجے میں وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے۔

ڈاکٹر ٹیگ نیل سویڈن میں کورونا وائرس کے خلاف مہم کے سربراہ ہیں جنہوں نے کہا ہے کہ ”ایسے ممالک یا علاقے جہاں لوگ فیس ماسک کی پابندی کر رہے ہیں، وہاں بھی کورونا وائرس کے پھیلنے کی شرح بہت زیادہ ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ فیس ماسکس بے اثر ثابت ہو رہے ہیں۔ انہیں پہننے کے بعد لوگ سماجی فاصلے کی پابندی اور دیگر انتہائی لازمی احتیاطی تدابیر اختیار نہیں کرتے کیونکہ وہ سمجھتے ہیں کہ ماسک پہننے سے وہ محفوظ ہو گئے ہیں۔ لوگوں کا یہ رویہ غلط ہے۔ انہیں ماسک پہننے کے بعد بھی دیگر تمام احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئیں، بصورت دیگر وہ وائرس سے محفوظ نہیں رہ پائیں گے۔“

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -