میں نے اپنے تجربات وقت سے حاصل کئے ، ایک فنکار کا تخیل اُس کا سب سے بڑا ہتھیار ہے

میں نے اپنے تجربات وقت سے حاصل کئے ، ایک فنکار کا تخیل اُس کا سب سے بڑا ہتھیار ...
میں نے اپنے تجربات وقت سے حاصل کئے ، ایک فنکار کا تخیل اُس کا سب سے بڑا ہتھیار ہے

  

مترجم:علی عباس

قسط: 51

 کوئنسی اور میں نے ”آف دی وال“کے بارے میں بات چیت کی اور احتیاط سے منصوبہ بندی کی کہ ہم کیسی موسیقی چاہتے تھے۔ جب اُس نے مجھ سے پوچھا کہ میں سٹوڈیو میں سب سے زیادہ کیا سرگرمی چاہتا ہوں تو میں نے اُسے بتایا کہ ہمیں اس کی موسیقی جیکسنز سے مختلف بنانی ہے، اس سے الگ ہونے کےلئے جدوجہد کرنا ہوگی، یہ ذہن میں رکھتے ہوئے کہ ہم نے جیکسنز بننے کےلئے کس قدر سخت محنت کی تھی۔ کوئنسی جانتا تھا کہ میرا کیا مطلب ہے۔ اور ہم نے ایک ساتھ ایک البم تخلیق کی جو ہمارے مقصد کو ظاہر کرتی تھی۔"Rock With You" ایک کامیاب اور ایسا گیت تھا جس کی میں خواہش کر رہا تھا۔ میرے گانے اور ناچنے کےلئے یہ بہترین تھا۔ کوئنسی روڈ ٹیمپرٹن کو بینڈ ’ ’ہیٹ ویو“ کے ساتھ’ ’ بوگی نائٹس“ پر کام کرنے کی وجہ سے جانتا تھا، اُس نے گیت کو زیادہ جارحانہ پیرائے میں لکھا تھا اور ذہن میں اس کا خاکہ تشکیل دیا تھا لیکن کوئنسی نے اسے نرم کر دیا اور اس میں سنتھیسائزر شامل کیا جس کی آواز ساحلِ سمندر پر پڑے سیپ کے مانند تھی  اور میں روڈ کے کام کے قدر دان تھے اور ہم نے بالآخر اُس سے کہا کہ وہ اپنے 3 گیتوں کو میرے مزاج کے مطابق رنگ دے جس میں ٹائٹل سانگ بھی شامل تھا۔ روڈ کئی طرح سے میراہم مزاج تھا۔ وہ گھر میں رہتے ہوئے رات کی زندگی کے بارے میں تحریر لکھتا اور گلوکاری کیا کرتا،وہ باہر جاکر اسے محسوس نہیں کیا کرتا تھا۔ اس اَمر نے مجھے ہمیشہ حیران کیا کہ جب لوگ یہ اخذ کر لیتے ہیں کہ فنکار نے کوئی چیز حقیقی تجربات کو بنیاد بناتے ہوئے تخلیق کی ہے یا یہ اُس کے اپنے اندازِ زندگی کا اظہار ہے۔ اکثر سچائی سے بڑھ کر کوئی حقیقت نہیں ہو سکتی۔ میں جانتا ہوں میں نے اپنے تجربات وقت سے حاصل کئے ہیں لیکن میں سنتا اور پڑھتا بھی ہوں جن سے مجھے ایک گیت کا خیال مل جاتا ہے۔ ایک فنکار کا تخیل اُس کا سب سے بڑا ہتھیار ہے۔ یہ وہ کیفیت اور احساسات تخلیق کرتا ہے جو لوگ حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی یہ آپ کو ایک یکسر مختلف جگہ پر لے جاتا ہے۔

سٹوڈیو میں کوئنسی نے ارینجرز اور موسیقاروں کو اُن کے احساسات کے بیاں کےلئے قدرے آزادی تفویض کی تھی لیکن ان میں آرکسٹرا کی ترتیب شامل نہیں تھی جو اُس کی خوبی تھی۔ میں نے Destinyالبم کے رکن گریگ فلنگینز کی خدمات حاصل کی تھیں،ہم دونوںنے "Run The Floor"تک اینکائنو میں ایک ساتھ گیتوں پر کام کیا تھا، اس دوران سٹوڈیو سے وابستہ لوگ تاریخوں کے حصول کےلئے قطار میں کھڑے ہوتے تھے۔ گریگ کےساتھ ساتھ پاﺅلنہو ڈی کوسٹا ڈرم پر واپس آگیا تھا اور رینڈی "Don't Stop Till You Get Enough" میں مختصر وقت کےلئے جلوہ گر ہوا تھا۔

کوئنسی حیران کن ہے اور جی حضوری کرنے والوں سے اپنا کام نہیں کراتا۔ میں نے اپنی پوری زندگی پیشہ ور افراد کے درمیان گزاری ہے اور میں بتا سکتا ہوں کہ کون لوگ اپنا کیریئر جاری رکھنے کی کوشش کر رہے ہیں، کون تخلیق کر سکتا ہے اور کون اس قابل ہے جو زندگی میں ایک بار مثبت معنوں میں مقابلہ کرنے کی اہلیت رکھتے ہیں لیکن اپنا مشترکہ ہدف نہیں بھولتے۔ ہمیں لوئس ”تھنڈر تھنڈر“ جانسن کی خدمات حاصل تھیں جو کوئنسی کے ساتھ برادرز جانسن کی البموں میں کام کر چکا تھا۔ہماری ساری ٹیم معروف ستاروں واہ واہ واٹسن، مارلو ہنڈرسن، ڈیوڈ ولیمز اور لیری کارلٹن پر مشتمل تھی۔ اُن کا تعلق "Crusaders"سے تھا اور وہ البم کےلئے گٹار بجا رہے تھے۔ فنک، جاز کے بہترین فنکاروں میں سے جارج ڈیوک، فل اپ چرچ اور رچرڈ ہیتھ کی خدمات حاصل کی گئی تھیں اور تب تک انہوں نے ایسا کام نہیں کیا تھا اور ہو سکتا ہے کہ یہ طرز موسیقی اُس سے کچھ مختلف ہو جو وہ کرنے کے عادی تھے۔ کوئنسی اور میرے پیشہ ورانہ تعلقات بہتر تھے چنانچہ ہم ذمہ داریوں کا بوجھ بانٹ لیتے اور ایک دوسرے سے مستقل طور پر مشاورت کرتے رہتے تھے۔ )جاری ہے ) 

نوٹ : یہ کتاب ” بُک ہوم“ نے شائع کی ہے ۔ ادارے کا مصنف کی آراءسے متفق ہونا ضروری نہیں ۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں )۔

مزید :

ادب وثقافت -