چین میں بزنس ٹائیکون کو 13 سال قید،  کمپنی کو 8 ارب ڈالر جرمانے کی سزا

چین میں بزنس ٹائیکون کو 13 سال قید،  کمپنی کو 8 ارب ڈالر جرمانے کی سزا
چین میں بزنس ٹائیکون کو 13 سال قید،  کمپنی کو 8 ارب ڈالر جرمانے کی سزا

  

شنگھائی (ڈیلی پاکستان آن لائن) چین کے شہر شنگھائی کی ایک عدالت نے چینی نژاد کینیڈین ارب پتی شاؤ جیان ہوا کو 13 برس قید کی سزا سنادی۔ عدالت نے شاؤ جیان کی کمپنی ٹومارو ہولڈنگ کو ریکارڈ 55.03 ارب چینی یو آن (8.1 ارب ڈالر) کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔

الجزیرہ کے مطابق شاؤ اور اس کی کمپنی پر الزام تھا کہ انہوں نے عوام کے پیسے کا غلط استعمال  کرکے دھوکہ دیا، ان پیسوں کو غیر قانونی طور پر فنڈز اور رشوت کیلئے استعمال کیا گیا ۔شنگھائی کی عدالت نے قرار دیا کہ شاؤ اور اس کی کمپنی نے ریاست کے معاشی تحفظ کو نقصان پہنچایا۔ عدالت کی جانب سے شاؤ کو ساڑھے چھ ملین یو آن (نو لاکھ 57 ہزار 655 ڈالر) جرمانہ کیا گیا ہے۔

عدالتی فیصلے کے مطابق سنہ 2001 سے 2021 کے دوران شاؤ اور اس کی کمپنی نے سرکاری حکام کو شیئرز، رئیل اسٹیٹ، نقدی اور دیگر اثاثوں کی مد میں 680 ملین یو آن (99.87 ملین ڈالر) کی رشوت دی تاکہ اپنے غیر قانونی مفادات کا تحفظ کرسکیں اور فنانشل نگرانی سے بچ سکیں۔

مزید :

بین الاقوامی -