ہائیکورٹ کانوجوان کی بازیابی کیلئے پولیس کو ایک ماہ کا الٹی میٹم

ہائیکورٹ کانوجوان کی بازیابی کیلئے پولیس کو ایک ماہ کا الٹی میٹم

لاہور ( نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے 4 سال قبل جہاز سے گر کر جاں بحق ہونے والے نوجوان کے ساتھی کو بازیاب کرنے کے لئے لاہور پولیس کو ایک ماہ کا وقت دے دیا۔جسٹس عبدالسمیع خان نے ذکیہ جمشید کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزارنے موقف اختیار کیا کہ جنوری 2011میں دو نوجوان قاسم صدیق اور علی جمشید لاہور ایئر پورٹ پر نجی ایئر لائن کے طیارے کے پاس پہنچ گئے تھے جبکہ قاسم جہاز کے پہیے پر سوار ہونے میں کامیاب ہو گیا مگر جہاز اڑنے کے بعد قاسم گر کر جاں بحق ہو گیاجبکہ دوسرے نوجوان جمشید علی کو پولیس نے تفتیش کے لئے حراست میں لیا مگر آج تک درخواست گزار کے بیٹے جمشید علی کو پولیس نے پیش نہیں کیا، اس کے بعدپولیس ، آئی بی اور دیگر قانون نافذ کرنے والے ادارے جمشید علی کی حراست کا اعتراف کرنے سے انکاری ہیں لہٰذا عدالت جمشید علی کو بازیاب کرانے کا حکم دے، سی سی پی او لاہور امین وینس نے عدالت میں پیش ہو کر بتایا کہ علی جمشید کی بازیابی کے لئے سینئر پولیس افسروں کی کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے، نوجوان کو تلاش کرنے کیلئے ایک ماہ کا وقت دیا جائے، عدالت نے سی سی پی او کی استدعا پر نوجوان کو ایک ماہ میں بازیاب کرا کر پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے مزید سماعت 19جنوری تک ملتوی کر دی۔

مزید : صفحہ آخر