بونیر ،ایک کروڑ 23 لاکھ مالیت سے بننے والے پیر بابا فیڈر میں بے ضابطگی

بونیر ،ایک کروڑ 23 لاکھ مالیت سے بننے والے پیر بابا فیڈر میں بے ضابطگی

بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر)بونیر میں ایک کروڑ 23 لاکھ روپے کی مالیت سے بننے والے پیربابا فیڈر میں شدید بے ضا بطگی ہو ئی ہے ۔فیڈر میں کھمبے کم اونچائی پر لگائے گئے ہیں ۔کنڈکٹر تار جو لگایا گیاہے ۔انتہائی غیر معیاری ہے ۔اٹھ کیپیسٹر کی بجائے چار لگائے گئے ہیں ۔کنزیمور کورٹ میں پیسکو کے خلاف کیس بھی جمع کرائی تھی مگر انکا کہنا تھا کہ میرے پاس کو ئی اتھارٹی نہیں ہے ۔مذکورہ فیڈر پر سلطان وس کے چار ماربل کارخانے لگے ہیں جو بل کسی دوسرے فیڈر کو دیتے ہیں مگر بجلی پیربابا فیڈر سے لیتے ہیں ۔مرکزی وزیر پانی وہ بجلی ۔نیشنل اکاونٹی بیلٹی بیور اور انٹی کرپشن تحقیقات کرکے اس میں ملوث اہلکاروں کو سزا دی جائے ۔ان خیالات کا اظہار پیربابا سے تعلق رکھنے والے قانون دان مشتاق احمد خان ایڈوکیٹ نے مقامی صحافیوں کو تفصیلات بتاتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ سواڑی گریڈ سٹیشن سے تحصیل گدئزی کے لئے ایک فیڈر دیوانہ بابا کے نام سے قائم تھا ۔عوام کی بڑھتی ہو ئی بجلی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے 2013 میں پیربابا کے نام سے فیڈر کی منظوری ہو ئی ۔فیڈر کا قیام عمل میں لانے کے بعد بجلی صارفین کو فائیدہ کی بجائے نقصان کا سامنا کرنا پڑا ۔فیڈر استعمال ہونے والے تار ۔کیپیسٹرز اور دیگر سامان انتہائی ناقص ہیں ۔جس کی وجہ سے ہر وقت بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ درپیش ہوتاہے ۔انہوں نے فیڈر میں ناقص میٹریل استعمال ہونے کے خلاف کنزیمیور کورٹ میں کیس جمع کرایا مگر کورٹ کے جج کا کہنا تھا کہ میرے پاس کوئی اختیار نہیں ہے ۔مشتاق احمد خان ایڈوکیٹ نے پانی وہ بجلی کی وفاقی وزیر اور انٹی کرپشن محکموں کے سربراہان سے مطالبہ کیاکہ وہ فیڈر میں ہونے والے کرپشن کی تحقیقات کرے اور قومی خزانہ کو پہنچنے والے نقصان کا ازالہ کرے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر