ایوان صنعت و تجارت سیالکوٹ کے وفد کی وزیراعظم سے ملاقات

ایوان صنعت و تجارت سیالکوٹ کے وفد کی وزیراعظم سے ملاقات

سیالکوٹ (بیورورپورٹ) ایوان صنعت و تجارت سیالکوٹ کے صدر زاہدلطیف ملک نے بزنس کمیونٹی کے اعلیٰ سطحی وفد کے ہمراہ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے وزیر اعظم ہاؤس اسلام آباد میں ملاقات کی۔دوران ملاقات سیالکوٹ کی برآمدی انڈسٹری کی نمائندگی کرتے ہوئے صدر چیمبر نے انہیں برآمدی انڈسٹری کو درپیش مسائل کے فوری حل کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم وزیر اعظم کے انتہائی مشکور ہیں کہ انہوں نے نہ صرف میری بات کو غور سے سنا بلکہ برآمدات کے وسیع تر مفاد کی خاطر ان مسائل کے فوری حل کی یقین دہانی بھی کروائی۔صدر چیمبر نے کہا کہ دوران میٹنگ جن ایشوز پر بات ہوئی ان میں سر فہرست سیالکوٹ کے برآمد کنندگان کے ڈیوٹی ڈرابیک ( ربیٹ) کی ادائیگیوں میں غیر ضروری تاخیر کا مسئلہ تھا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے انہیں ربیٹ کی عدم ادائیگی کی وجہ سے برآمدی سرگرمیوں پر مرتب ہونے واہلے منفی اثرات کے بارے میں آگا ہ کیا۔اجلاس میں موجود وزیر اعظم کے سپیشل ایڈوائرز برائے ریونیو اینڈ فنانس ہارون اختر نے میری بات کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ سیالکوٹ کے برآمد کنندگان کے پچھلے ڈیڑھ سال کے ڈیوٹی ڈرابیک التواء کا شکار ہیں، سیالکوٹ کی برآمدات کو مزید تنزلی سے بچانے کیلئے ڈیوٹی ڈرابیک کی فوری ادائیگی انتہائی ضروری ہے۔ صدر چیمبر نے مزید کہا کہ دوسرا اہم ایشو پرائم منسٹرIncentiveپیکیج کا تھا جس پر میں نے وزیر اعظم سے درخواست کی تھی کہ پرائم منسٹرIncentiveپیکیج کے تمام 180ارب روپے کے فنڈ یکمشت ہی جاری کر دئیے جائیں اور ساتھ ہی ایس آر او 1062کے تحت کلیمز فائل کرنے کا طریقہ کار بھی واضح ہونا چاہیے۔ جس پر وزیر اعظم صاحب نے یقین دہانی کروائی ہیں کہ اگلے ہفتہ تک کلیمز فائل کرنے کے طریقہ کار کو حتمی شکل دے دی جائیگی اور برآمد کنندگان کو ادائیگیوں کیلئے ضروری فنڈز بھی مہیا کر دئیے جائیں گے۔صدر چیمبر زاہد لطیف ملک نے کہا کہ ہم وزیر اعظم کے انتہائی مشکور ہیں کہ انہوں نے مسئلہ کا فوری نوٹس لیتے ہوئے سیکرٹری فنانس کو مسئلہ کے حل کیلئے ہدایات جاری کیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر