پنشن یافتہ معشوق

پنشن یافتہ معشوق
پنشن یافتہ معشوق

  


امرتسر کے ایک ہوٹل میں اردو کے استاد شاعر فراق گورکھپوری چند شاعر دوستوں کے ہمراہ تشریف فرما تھے۔ ہوٹل کا منیجر ایک رجسٹر لے آیا اور ساحر ہوشیار پوری کی طرف بڑھاتے ہوئے بولا’’براہ کرم نام و پتہ لکھ دیجئے۔‘‘

ساحر نے اپنا نام اور پتہ لکھ دیا لیکن جب پیشے کے خانے پر نگاہ پہنچی تو الجھ گئے اور فراق صاحب سے پوچھنے لگے۔

’’کیوں صاحب میں اپنا پیشہ کیا لکھوں۔‘‘

’’معشوق لکھ دو‘‘ فراق بولے۔

’’ارے میاں اس عمر میں‘‘ ساحر نے مسکراتے ہوئے کہا۔

’’آگے پنشن یافتہ بھی لکھ دینا‘‘ فراق نے نہایت سادگی سے کہا۔

امجد سہیل۔اسلام م آباد

مزید : لافٹر