ملتان ‘ گلدین کالونی میں درخت کاٹنے کا انکشاف ‘ شہریوں کی مداخلت ‘ دو افراد فرار

ملتان ‘ گلدین کالونی میں درخت کاٹنے کا انکشاف ‘ شہریوں کی مداخلت ‘ دو افراد ...

ملتان (سپیشل رپورٹر) نواں شہر کے علاقہ گلدین کالونی میں درخت چوری کاٹنے کا انکشاف ہوا ہے۔ شہریوں کے آنے پر دو افراد فرار(بقیہ نمبر43صفحہ7پر )

ہو گئے جبکہ ایک پکڑ لیا گیا۔ درخت کاٹتے ہوئے بجلی کا ایک کھمبا بھی گرا دیا گیا۔ واضح رہے کہ حکومت پاکستان گرین اینڈ کلین مہم کے تحت ملک بھر میں زیادہ سے زیادہ شجرکاری کر رہی ہے جس میں تمام سرکاری و نیم سرکاری اداروں سمیت شہری بھی بڑھ چڑھ کر اس مہم میں حصہ لے رہے ہیں لیکن دوسری طرف پی ایچ اے اہلکاران ملی بھگت کے نتیجے میں پارکوں اور گرین بیلٹس پر موجود درختوں کو چوری کاٹ کر اس مہم کو ناکام بنا رہے ہیں۔ گزشتہ روز نواں شہر کے علاقہ گلدین کالونی میں موجود پارک میں تین افراد 30 سال پرانے اور گھنے درخت کاٹتے ہوئے مکینوں کے ہتھے چڑھ گئے۔ جنہوں نے بجلی کا ایک کھمبا بھی گرا دیا، پولیس کو بلانے پر دو افراد فرار ہو گئے اور ایک ہتھے چڑھ گیا جس نے شہریوں کو بتایا کہ وہ پی ایچ اے اہلکار محمد بوٹا ہے جو ڈپٹی ڈائریکٹر ہارٹیکلچر سعد قریشی کی ہدایت پر درخت کاٹ رہا ہے ‘ جس پر مکینوں نے ڈی جی پی ایچ اے علی اکبر بھٹی کو تمام صورتحال سے آگاہ کیا اور پکڑے گئے شخص کی بات بھی کروائی جس کے بعد اس بات کی نشاندہی ہو گئی کہ وہ پی ایچ اے اہلکار ہے جسے ڈی جی نے آج 20 دسمبر کو وضاحت کے لئے طلب کر لیا ہے۔ادھر ڈپٹی ڈائریکٹر ہارٹیکلچر سعد قریشی کا کہنا ہے کہ سردیوں میں درختوں کے پتے جھڑتے ہیں اس لئے ان کی کٹنگ کے لئے معمول کے مطابق اہلکاروں کو بھیجا تھا۔ دوسری طرف چیئرمین پی ایچ اے اعجاز جنجوعہ نے رابطہ کرنے پر بتایا کہ یہ ان کے خلاف سازش ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پی ایچ اے میں موجود ایک کرپٹ ٹولہ کے خلاف وہ کارروائی کر رہے ہیں جو خود کو بچانے کے لئے منفی ہتھکنڈوں کے ذریعے اپنا ردعمل کا اظہار کر کے ان کی ساکھ کو متاثر کرنا چاہتے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر