راجن پور میں فلٹریشن پلانٹس کی تنصیب خواب ‘ زہریلا پانی شہریوں کا مقدر

راجن پور میں فلٹریشن پلانٹس کی تنصیب خواب ‘ زہریلا پانی شہریوں کا مقدر

راجن پور (ڈسٹرکٹ رپورٹر)راجن پور کازیرزمین پانی زہریلاہوگیا ،راجن پورشہر کی ایک لاکھ آبادی کیلئے کم از کم دس فلٹریشن پلانٹ نصب کئے جائیں ٹی ڈی ایس خوفناک حد تک بڑھنے سے راجن پور کے شہری جلد ،معدہ ،ہیپاٹائیٹس ،گردوں کی بیماریوں میں مبتلاء ہو نے لگے۔شہریوں(بقیہ نمبر49صفحہ12پر )

نعیم احمد، سلیمان اختر ، عبدالرشید ، غلام رسول، خالد اختر ودیگر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ2010 کے سیلاب کے بعد راجن پور شہر کاپانی زہریلا ہوچکاہے زیرزمین پانی کے ٹی ڈی ایس میں خطر نا ک حد تک اضافہ ہو چکا ہے جس سے جگر ،معدہ، گردوں سمیت ہیپاٹائیٹس کی بیماری عام ہورہی ہے جبکہ موذی مرض کینسر کے مریضوں کی تعداد میں روزبروز اضافہ ہورہاہے شہر میں جیل روڈ پراکلوتا فلٹریشن شہریوں کی پانی کی ضروریات پوری کر نے کیلئے ناکافی ہے اس فلٹریشن پلانٹ کی حالت بھی میو نسپل کمیٹی عملہ کی عدم توجہی سے ناگفتہ بہ ہے موجودہ حکومت نے شہریوں کی صحت کیلئے مناسب اقدامات اُٹھا نے کااعلان کیا ہے مگر تاحال کوئی پیش رفت دکھائی نہیں دیتی راجن پور شہر کی آبادی کومدنظر رکھتے ہوئے یہاں دس فلٹریشن پلانٹ قائم کیا جاناانتہائی ضروی ہوچکا ہے شہریو ں نے وزیراعظم پاکستان اور وزیراعلیٰ پنجاب سے اس حوالے سے اقدامات اُٹھا نے کا مطا لبہ کیا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر