سیکرٹری ہیلتھ اور مشیروزیر صحت کا ایم ٹی آئی خیبر ٹیچنگ ہسپتال کا دورہ

سیکرٹری ہیلتھ اور مشیروزیر صحت کا ایم ٹی آئی خیبر ٹیچنگ ہسپتال کا دورہ

پشاور(سٹاف رپورٹر)ڈاکٹر فاروق جمیل سیکرٹری ہیلتھ خیبر پختونخوا اور ڈاکٹر جواد واصف مشیر وزیر صحت نے ایم ٹی آئی خیبر ٹیچنگ ہسپتال کا دورہ کیا ۔ سیکرٹری ہیلتھ کو عدالتی حکم کے مطابق ایم ٹی آئی خیبر ٹیچنگ ہسپتال کے بورڈ آف گورنر کے اختیارت تفویض کئے گئے ہیں۔ ہسپتال ڈائریکٹر ڈاکٹر نیک داد خان اور میڈیکل ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر روح المقیم نے اُن کو بریفنگ دی جس میں مختلف امور اور ہسپتال کو درپیش مسائل کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ایم ٹی آئی انتظامیہ نے سیکرٹر ی ہیلتھ کو بتایا کہ نئی ایکسیڈنٹ اینڈ ایمرجنسی یو نٹ کے لئے آلات و سامان کی خریداری کے لئے تمام کاروائی مکمل کرلی گئی ہے۔صرف فنانس ڈیپارٹمنٹ سے فنڈز کی اجراء کا انتظار ہے۔سیکرٹری صحت اور ڈاکٹر جواد واصف مشیر وزیر صحت نے اس بات کی یقین دہانی کرائی کہ محکمہ صحت محکمہ فنانس اور وفاقی حکومت کے ساتھ متواتر رابطے میں ہیں اور جلد ازجلد تمام ایم ٹی آئی ہسپتالوں کو اضافی امدادی فنڈز کی ادئیگی کی جائے گی۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ موجودہ حکومت صحت وعلاج کی سہولیات کی فراہمی کو اولین ترجیح دیتی ہے اور اس میں مزید بہتر ی لانے کے لئے گامزن ہے۔اس موقع پرسیکریٹری ہیلتھ نے نئے ایکسیڈنٹ اینڈ ایمرجنسی ڈیپارٹمنٹ کا دورہ کیا۔ یہ عمارت 326بستروں اور 9منزلوں پرمشتمل ہے۔جس میں ہسپتال کو درپیش مختلف مسائل پر بحث ہوئی جس پر انھوں نے موقع پر ہدایات جاری کر دیئے۔یہاں دی جانے والی سہولیات پر خوشی کا اظہار کیا جس میں خصوصاً چھ مختلف شعبوں کی 24گھنٹے سروسسز کی سہولت کو سراہا۔سیکرٹری ہیلتھ ڈاکٹر فارق جمیل نے ہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ کے بیرونی دیوار کے نامکمل حصوں کا معائنہ کیا اور ان کو جلد از جلد تعمیر کرنے کی ہدایات دیں تاکہ ادارے کی سیکورٹی اور غیر ضروری آمدورفت پر قابو پایا جاسکے اور ساتھ ہی ہدایات دی کہ دیوار کی تکمیل کی رپورٹ ارسال کی جائے۔انھوں نے ہسپتال میں تعمیر نو اور مرمت کے دوسرے کاموں کا بھی معائنہ کیا اور کام کے معیار کو برقراررکھنا اور مقررہ وقت میں تکمیل کرنے پر زور دیا اور بتایا گیا کہ انتظامیہ کی درخواست پر اگلے ہفتے ایک میٹنگ منعقد ہو گی جس میں مختلف درپیش مسائل پر سیکریٹری ہیلتھ بطور بورڈ آف گورنر شامل ہونگے۔اور مختلف اُمور کا جائزہ لیں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر