تعلیم کوذریعہ آمدن نہ بنائیں ، فیسوں میں اضافہ واپس لیا جائے ، سردار حسین بابک

تعلیم کوذریعہ آمدن نہ بنائیں ، فیسوں میں اضافہ واپس لیا جائے ، سردار حسین ...

پشاور ( پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے وبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ خطے میں تعلیم و شعور کو عام کرنا اے این پی کو خدائی خدمتگاروں سے ورثے میں ملا ہے اور اپنے دور حکومت میں نا مساعد حالات کے باوجود تعلیمی شعبہ میں جو انقلابی خدمات انجام دیں وہ تاریخ کا حصہ ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور یونیورسٹی کے پیوٹا ہال میں پختون سٹوڈنتس فیڈریشن کے زیر اہتمام نئے آنے والے طلبا و طالبات کے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا کہ صوبے کے طول و عرض میں تعلیمی اداروں کی تعمیر اور ان میں بنیادی سہولیات کی فراہمی، اساتذہ کو درپیش مشکلات و مسائل کا حل،نصاب میں تبدیلی اور سرکاری تعلیمی اداروں پر عوامی اعتماد کی بحالی اے این پی کے دور حکومت کے یادگار کارہائے نمایاں ہیں، انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت طلباء پر تعلیم کے دروازے بند کرنے کی بجائے فیسوں میں کیا گیا اضافہ فوری واپس لے اور تعلیم کو ذریعہ آمدن بنانے سے گریزکرے، سردار حسین بابک نے یونیورسٹی انتظامیہ سے بھی مطالبہ کیا طلباء پر دائر کی گئی ایف آئی آرز واپس لے اور انہیں یونیورسٹی میں داخلوں اور ہاسٹل سے متعلق درپیش مسائل کا حل تلاش کریں،انہوں نے کہا کہ طلباء کو بے جا تنگ کرنا حصول علم کی راہ میں بڑی رکاوٹ ہے،یونیورسٹی انظامیہ کو چاہئے کہ طلبا و طالبات کو بہتر تعلیمی ماحول فراہم کرنے کیلئے مزید اقدامات کرے ، سردار بابک نے طلبا و طالبات پر بھی زور دیا کہ یونیورسٹی کے پر امن تعلیمی ماحول میں مزید بہتری کیلئے اپنا کردار ادا کریں اور اپنی تمام تر توجہ حصول علم پر مرکوز رکھنے کے ساتھ ساتھ ہم نصابی سرگرمیوں میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیں،اس موقع پر پختون ایس ایف کے صوبائی صدر وسیم خٹک اور بلال خان بونیری نے بھی خطاب کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر