مقبوضہ کشمیر میں صدارتی نظام کا نفاذ بھارتی بوکھلاہٹ ہے ،حافظ سعید

مقبوضہ کشمیر میں صدارتی نظام کا نفاذ بھارتی بوکھلاہٹ ہے ،حافظ سعید

لاہور (نمائندہ خصوصی) امیر جماعۃالدعوۃ پاکستان پروفیسر حافظ سعید نے کہا ہے مقبوضہ کشمیر میں گورنر راج کے بعد صدارتی نظام نافذ کرنا بھارتی بوکھلاہٹ کی دلیل ہے، نہتے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو ظلم و دہشت گردی کے ذریعہ دبانا ممکن نہیں، پاکستان اللہ کی بہت بڑی نعمت ہے‘ اس کا تحفظ سب پر فرض ہے۔ ظلم اور ناانصافی کے خاتمہ میں محنت کش اہم کردار ادا کر سکتے ہیں،گروہ بندیوں میں الجھنے کی بجائے ملک میں اتحادویکجہتی کا ماحول پیدا کرنے کی ضرورت ہے،اسلام امن پسندی کا دین ہے، کسی پر ظلم کی اجازت نہیں دیتا۔ وہ مرکز القادسیہ چوبرجی میں ملی لیبر فیڈریشن کے زیر اہتمام واسا ایمپلائز پھول یونین کے نومنتخب عہدیداران کے اعزاز میں استقبالیہ تقریب سے خطاب اور بعدا زاں مختلف وفود سے گفتگو کر رہے تھے۔ اس موقع پر ملی مسلم لیگ کے صدر سیف اللہ خالد، ملی لیبر فیڈریشن کے صدر ایس ڈی ثاقب، صدر واسا ایمپلائزپھول یونین سعید خاں، چیئرمین واسا پھول یونین رانا اقبال،چوہدری محمد احسان، راجہ افضل، شبیر گجر، ابوالہاشم ربانی، رانا اشفاق، محبوب شاہ،راناشمشاد،یونس خان ودیگر نے بھی خطاب کیا۔ تقریب کے دوران واسا ایمپلائز پھول یونین کے عہدیداران کویونین انتخابات میں کامیابی پر مبارکباددی گئی۔ ہم نے محنت کشوں کے ہاتھ مضبوط کرنے ہیں تا کہ انہیں حقوق ملیں اور ظلم و ناانصافی ختم ہو ،مغرب نے استحصالی نظام بنائے جس سے غریب کا استحصال ہوا۔انہوں نے واسا ایمپلائز پھول یونین کے نومنتخب عہدیداران کو مبارکباد پیش کی اور کہاکہ ہم نے کام کرنا اور محنت کرنی ہے، اسلام انسانوں کے حقوق کی بات کرتا ہے کسی کو زیادتی کا حق نہیں دیتا۔

حافظ سعید

مزید : صفحہ آخر