سائنسدانوں نے صرف ایک ٹیکے کے ذریعے کینسر کے علاج کا طریقہ دریافت کرلیا

سائنسدانوں نے صرف ایک ٹیکے کے ذریعے کینسر کے علاج کا طریقہ دریافت کرلیا
سائنسدانوں نے صرف ایک ٹیکے کے ذریعے کینسر کے علاج کا طریقہ دریافت کرلیا

  


نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کینسر کے حالیہ طریقہ ہائے علاج کے انتہائی خطرناک مضراثرات بھی ہیں اور یہ بسااوقات مو¿ثر بھی ثابت نہیں ہوتے۔ اب سائنسدانوں نے محض ایک ٹیکے کے ذریعے کینسر کا نیا علاج دریافت کر لیا ہے۔ ویب سائٹ bigthink.com کے مطابق یہ اختراعی ایجاد امریکہ کی سٹینفرڈ یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے کی ہے۔ یہ ٹیکہ کینسر کے ٹیومر میں لگایا جائے گا جس سے نہ صرف وہ ٹیومر ختم ہو جائے گا بلکہ پورے جسم میں اس ٹیکے کے اثرات جائیں گے اور اس شخص کو آئندہ کینسر لاحق ہونے کے امکانات بھی کم ہو جائیں گے۔

رپورٹ کے مطابق یہ انجکشن دو ایجنٹس کو ملا کر بنایا گیا ہے جس کا کام کینسر کے خلاف مدافعتی نظام کو متحرک کرنا ہو گا۔ تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر رونالڈ لیوی کا کہنا تھا کہ ”یہ صرف ایک انجکشن سخت ٹیومر کے خاتمے کے لیے کافی ہو گا کیونکہ ٹیومر کی جگہ پر لگایا جائے گا اور اس کی اثرپذیری اس جگہ پر زیادہ مرکوز ہو گی۔ جیسے ہی یہ دو ایجنٹس انجکشن کے ذریعے کینسر کے ٹیومر میں داخل کیے جائیں گے یہ انسان کے مدافعتی نظام کو متحرک کر دیں گے۔چوہوں پرتحقیق کے دوران اس ٹیکے کے بہت مو¿ثر نتائج سامنے آئے ہیں۔ہمیں یقین ہے کہ یہ انجکشن لگ بھگ ہر قسم کے کینسر کے خاتمے کے لیے انتہائی مو¿ثر ثابت ہو گا۔ “

مزید : تعلیم و صحت