اسرائیلی وزیر اعظم 2700 ڈالر کی آئس کریم کھا گئے

اسرائیلی وزیر اعظم 2700 ڈالر کی آئس کریم کھا گئے

تل ابیب(ان لائن) اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو اپنی پسندیدہ ٹھنڈی میٹھی آئس کریم کی خریداری سرکاری خزانے سے کرنا معیوب نہیں سمجھتے۔۔ اسرائیلی اخبار کے مطابق صہیونی وزیر اعظم نے اپنے من بھاتے آئس کریم پارلر سے آئس کریم منگوانے کے لئے حال ہی میں سرکاری خزانے سے خصوصی فنڈ وصول کیا ہے۔ مبلغ دو ہزار سات سو ڈالر مالیت بجٹ کی منظوری نیتن یاہو کی یروشلم میں اپنی سرکاری رہائش گاہ کے قریب واقع میٹوڈیلا آئس کریم پارلر میں فروخت ہونے والی پستہ اور وینلا ذائقے کی آئس کریم پسندیدگی کے اظہار کے بعد جاری کیا گیا۔ اسرائیلی وزیراعظم مبینہ طور پر گزشتہ برس پورا سال اپنے عملے کے ہاتھ میٹوڈیلا سے آئس کریم منگواتے رہے۔ وزیر اعظم کی سرکاری رہائشگاہ کی دیکھ بھال کے لئے مختص میزانئے میں آئس کریم کی خریداری کی گنجائش نہیں تھی تاہم ان کے زیرک سٹاف ممبران نے اس مد میں سرکاری خزانے سے رقم نکلوا کر وزیر اعظم کے شوق کی انتہا کر دی۔ بجٹ منظوری کی خبر لیک ہونے کے بعد سے نیتن یاہو نے میٹوڈیلا سے آئس کریم منگوانا بند کر دی اور معاہدہ ختم کر دیا گیا۔

مزید : صفحہ آخر