افضل گورو کی پھانسی انصاف کے ماتھے پر ایک سیاہ دھبہ ہے‘اہلیہ

افضل گورو کی پھانسی انصاف کے ماتھے پر ایک سیاہ دھبہ ہے‘اہلیہ

  

سرینگر(اے پی پی)مقبوضہ کشمیر میں شہید محمد افصل گورو کی اہلیہ نے اپنے شوہر کی پھانسی کو بھارت کیلئے شرمناک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ راجیوگاندھی کے قاتلوں کے بارے میںبھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے نے یہ واضح کر دیا ہے کہ نئی دلی کشمیریوں کے ساتھ مویشیوں جیسا برتاﺅ کر رہا ہے۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق افضل گور و کی اہلیہ تبسم گورو نے کہا کہ انکے شوہر کو بھارتی معاشرے کے اجتماعی ضمیر کی بھینٹ چڑھا دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ افضل گورو کی پھانسی انصاف کے ماتھے پر ایک سیاہ دھبہ ہے کیونکہ پھانسی کا فیصلہ دستیاب شہادتوں کی بنیاد پر نہیں بلکہ بھارتیوں کے اجتماعی ضمیر کی بنیاد پر کیا گیا۔ تبسم گورو نے کہا کہ وہ بھارتی سپریم کورٹ سے پوچھنا چاہتی ہے کہ اس نے افضل گورو کے مقدمے میں انصاف کو نظر انداز کر کے ایک متعصبانہ فیصلہ کیوں کیا ۔ انہوںنے کہا کہ یہ ثابت ہو چکا ہے کہ بھارت اپنے خود ساختہ اور متعصب قوانین کو کشمیریوں کی مبنی برحق آواز کو دبانے کے لیے استعمال کر رہا ہے۔ تبسم گورو نے کہا کہ افضل گورو کی پھانسی کے فوراً بعد بھارتی سپریم کورٹ نے کئی مجرموں کی سزائے موت کو عمر قید میں بدل دیا ۔ انہوں نے کہا کہ افضل گورو کی ناحق پھانسی کے بعد اب بھارتی سپریم، حکومت اور وہاں کے عوام مطمئن ہو گئے ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -