حریت رہنماﺅں کی طرف سے بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے پر کڑی تنقید

حریت رہنماﺅں کی طرف سے بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے پر کڑی تنقید

  

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں حریت رہنماﺅں اور انسانی حقوق کی تنظیموں نے کہا ہے کہ کشمیری عوام کو بھارتی عدالتی نظام سے انصاف کی کوئی امیدنہیں ہے کیونکہ یہ نظام نفرت اورتعصب پر مبنی ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق حریت رہنماﺅںنے بھارتی سپریم کورٹ کے حالیہ فیصلے جس میں راجیو گاندھی کے قاتلوں کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کردیا گیا ہے پر شدید تنقید کی ہے ۔ انہوںاستفسار کیا کہ افضل گورو جسے ایک جھوٹے مقدمے میں پھانسی دی گئی تھی کے حق میں اس طرح کا فیصلہ کیوں نہیں دیا گیا ۔

 بزرگ کشمیری حریت رہنماءسید علی گیلانی نے ایک بیان میں سپریم کورٹ کے فیصلے کو تمام کشمیریوں کیلئے چشم کشاقراردیا۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے کہاہے کہ اس فیصلے سے ظاہر ہوتا ہے کہ بھارت نے کشمیریوں کے خلاف انتقامی رویہ اختیار کر رکھا ہے ۔ آزادی پسند رہنماﺅں محمد یاسین ملک، شبیر احمد شاہ ، نعیم احمد خان ، ظفر اکبر بٹ ، زمرودہ حبیب ، مختار احمد وازہ ، محمد اعظم انقلابی اور فردوس احمد شاہ نے اپنے الگ الگ بیانات میں اس فیصلے پر تنقید کی۔ انسانی حقوق کے معروف کارکن اور ادیب گوتھم نولکھا نے ایک میڈیا انٹرویو میں کہا ہے کہ اس فیصلے سے واضح ہوگیا ہے کہ کشمیری ایک پسا ہوا اور مظلوم طبقہ ہے۔ کشمیر میں انسانی حقوق کے علمبردار خرم پرویز نے کہا ہے کہ افضل گورو کے کیس میں ایسا ہی فیصلہ کیا جانا چاہیے تھا۔ ادھر آج سرینگر میں بھارت کے عدالتی نظام کے دوہرے معیار اور جموںو کشمیر پر بھارت کے غیر قانونی قبضے کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے گئے ۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنماﺅں جاوید احمد میر ، سید بشیر اندرابی اور محمد یوسف نقاش نے سرینگر کے علاقوں پریس کالونی اور لال چوک میں احتجاجی مظاہروں کی قیادت کی ۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنماﺅں مصدق عادل ، یاسمین راجہ اور عبدالاحد پرہ سوپور کے علاقے زالورہ میں ایک شہید کے گھرگئے ۔ اس موقع پر انہوںنے عالمی برادری پر زوردیا کہ وہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔ سابق کٹھ پتلی وزیر شبیر احمد خان کے خلاف بے حرمتی کے الزامات کی تحقیقات کرنے والے انویسٹی گیشن افسر کی ٹرانسفر کے خلاف آج جموں میں حزب اختلاف نے نام نہاد اسمبلی کے اجلاس کے دوران احتجاج کیا اور کارروائی کا بائیکاٹ کیا۔ا

مزید :

عالمی منظر -