بھارتی حکومت کاکشمیریوں کے ساتھ برتاﺅ غیر مساویانہ ہے‘ نولکھا

بھارتی حکومت کاکشمیریوں کے ساتھ برتاﺅ غیر مساویانہ ہے‘ نولکھا

  

سرینگر (اے پی پی) ممتاز بھارتی مصنف اور انسانی حقوق کے کارکن گوتم نولکھا نے کہا ہے کہ محمد افضل گورو کی خفیہ پھانسی او ر راجیوگاندھی کے قاتلوں کی پھانسی کو عمر قید میں بدلنے کے بھارتی سپریم کورت کے حالیہ فیصلے نے واضح کر دیا ہے کہ تاملوں اور سکھوں کے مقابلے میں کشمیریوں کو غیر مساویانہ سلوک کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

کشمیر میڈیاسروس کے مطابق گوتم نولکھا نے سرینگر سے شائع ہونے والے ایک رونامے کو ٹیلیفونک انٹرویو میں کہا کہ افضل گورو کے معاملے میں ہندو قومیت بازی لے گئی اور بھارتی حکومت نے انہیں پھانسی دیکر یہ پیغام دیا کہ اسے کشمیریوں کے احساسات اور جذبات کی کوئی پرواہ نہیں۔ دریں اثناءانسانی حقوق کے کشمیری کارکن خرم پرویز نے کہا کہ سپریم کورٹ افضل گورو کی پھانسی کو عمر قید میں بدل سکتی تھی لیکن ایسا نہیں کیا گیا۔ انہوںنے کہا کہ بھارتی حکومت اور سپریم کوٹ کاسلوک کشمیریوں کے ساتھ ہمیشہ متعصبانہ رہا ہے۔ خرم پرویز نے کہا کہ راجیو گانڈی کے قاتلوں کی سزا موت میں کمی کر کے اسے عمر قید میں بدل دیا گیا لیکن افضل گورو کو یہ فائدہ نہیں دیا گیا ۔

مزید :

عالمی منظر -