ریلوے کا قابضین کیخلاف آپریشن جاری 4 کروڑ روپے مالیت کی اراضی واگزار

ریلوے کا قابضین کیخلاف آپریشن جاری 4 کروڑ روپے مالیت کی اراضی واگزار

  

لاہور(سٹاف رپورٹر)وزارت ریلوے کی ہدایت پر ریلوے اراضی پرغیر قانونی قابضین کے خلاف آپریشن گزشتہ روز بھی جاری رہا تاہم غیر قانونی قابضین کی طرف سے بھی مزاحمت کا سلسلہ جاری ہے گزشتہ روز مختلف مقامات پر آپریشن کے دروان 12سے زائد ریلوے ملازمین زخمی ہوئے اور انہیں سخت پتھراﺅ کا بھی سامنا رہا جس کے نتیجے میں تین افراد کو گرفتار کیا گیا لیکن کاروائی کے دوران ریلوے انتظامیہ 223 مرلے 4 کروڑ 7 لاکھ روپے مالیت کی اراضی واگزار کروانے میں کامیاب ہوگئی۔دوسری طرف متاثرین نے ٹائر جلا کر روڈ بلاک کرکے شدید احتجاجی مظاہرہ کیا جس کے باعث ٹریفک کا نظام درہم برہم ہوگیا۔ تفصےلات کے مطابق لاہور ڈویژن میں پتوکی اسٹیشن سے 160 مرلے رہائشی مالیتی 3 کروڑ 20 لاکھ روپے، بچےانہ اسٹیشن سے 60 مرلے کمرشل مالیتی 60 لاکھ روپے ، ورکشاپ ڈوےژن میں باجہ لائن سے 2 مرلے کمرشل مالیتی 12 لاکھ روپے ، راولپنڈی ڈویژن میں ڈےڑھ مرلہ کمرشل مالیتی 15 لاکھ روپے واگذار کروائی ۔ ورکشاپ ڈویژن میں انکروچمنٹ آپرےشن کے وقت قابضین نے مزاحمت کی کوشش کی اور ریلوے عملہ و پولیس پر پتھراﺅ کےا جس سے رےلوے عملہ زخمی ہو گےا ۔ رےلوے پولےس نے موقع پر کاروائی کرتے ہوئے 3 ملزمان غلام محمد اور اس کے بےٹے شہزاد اور محمد نواز کو فی الفور گرفتار کر لےا ۔ ملزمان کے خلاف تھانہ رےلوے پولےس ورکشاپس میں مقدمہ درج رجسٹر کر لےا گےا ہے ۔ مذکورہ افراد کی گرفتاری کے بعد علاقے کے مکین ریلوے پاورہاﺅس مغلپورہ روڈ پر نکل آئے اور انہوں نے ٹائر جلا کر سڑک بلاک کردی اور بعدازاں مغلپورہ ریلوے ورکشاپس تھانے کا گھیراﺅ کرلیا اور ملزمان کی رہائی کا مطالبہ کیا ۔کئی گھنٹے شدید احتجاج کے بعد احتجاج کے شرکاءمنتشر ہوگئے ۔

ریلوے آپریشن

مزید :

صفحہ آخر -