بجلی کا بحران ایک بار پھر بد ترین صورت حال اختیار کر گیا

بجلی کا بحران ایک بار پھر بد ترین صورت حال اختیار کر گیا

  

لاہور(کامرس رپورٹر)بجلی کی پیداوار میں کمی کے باعث ملک میں بجلی کا بحران ایک بار پھر بد ترین صورت حال اختیار کر گیا ہے ۔ پیداوار میں کمی کے باعث شارٹ فال بڑھ کر ایک بار پھر ساڑھے چار ہزار میگا واٹ کی سطح پر پہنچ گیا ہے ۔ شارٹ فال میں اضافہ کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں نمایاں اضافہ کر دیا گیا ہے ۔ بڑے شہروں میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ بڑھا کر چودہ گھنٹے اور دیہی علاقوں میں اٹھارہ گھنٹے تک کر دیا گیا ۔ شہروں میں گزشتہ روز مرمت کے نام پر بھی چھ سے اٹھ گھنٹے تک بجلی کی بندش شروع کر دی گئی ۔ ہر سب ڈویژن میں ایک فیڈرز لازمی مرمت کے نام پر بند رکھا گیا ۔ ان بندش والے علاقوں میں شیڈول کی لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بھی جاری رکھا گیا ۔ گھوٹکی کے قریب قادر پور سے سندھ اور پنجاب کو گیس پائپ لائن شر پسند عناصر کی جانب سے اڑا دینے سے روش پاور پلانٹ اور فوجی کیبر والا پاور پلانٹ کو گیس کی سپلائی بند ہو گئی ہے جس سے روش پاور پلانٹ سے ملنے والے 450 میگا و اٹ بجلی اور فوجی کیبر والا سے ملنے والی 157 میگا واٹ بجلی سسٹم سے نکل گئی ہے دوسری جانب منگل اور بدھ کی درمیانی رات مظفر گڑھ پاور پلانٹ میں آتشزدگی کے باعث مظفر گڑھ پاور پلانٹ کے پانچ یونٹ بند ہو گئے ہیں جس سے نیشنل گرڈ سسٹم سے 1150 میگا واٹ بجلی نکل گئی ہے ۔ انرجی مینجمنٹ سیل کے ذرائع کے مطابق گزشتہ روز بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ 12130 میگا واٹ جبکہ پیداوار 7553 میگا واٹ رہی طلب و رسد میں 4577 کا فرق رہا ۔

بجلی کا بحران

مزید :

صفحہ آخر -