اپوزیشن رہ نماؤں کو بیرون ملک قتل کرنے کا ایرانی ٹی وی پر اعتراف

اپوزیشن رہ نماؤں کو بیرون ملک قتل کرنے کا ایرانی ٹی وی پر اعتراف

  

تہران(این این آئی)ایران کے سرکاری ٹیلی ویڑن نے پہلی بار تسلیم کیا ہے کہ ایرانی حکومت بیرون ملک مقیم اپوزیشن رہ نماؤں کو ایجنٹوں کی مدد سے قتل کراتی رہی ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق ایرانی ٹی پر نشر کیے جانے والے ایک پروگرام میں شریک انیس النقاش جو حزب اللہ کے ایک سابق کمانڈر عماد مغنیہ کی تربیت کی وجہ سے بھی مشہور ہیں نے بیرون ملک اپوزیشن رہ نماؤں کو ’ٹھکانے‘ لگائے جانے کا اعتراف کیا۔ایک سوال کے جواب میں انیس نقاش نے کہا کہ وہ فرانس میں قید تھے جب ایرانی صحافی وحید یامین بور ان کے پاس آئے۔ایران میں انقلاب کے ایک سال بعد انیس النقاش فرانس میں سابق بادشادہ کے وزیراعظم شاہ پور بختیار کو قاتلانہ حملے میں ہلاک کرنے کی اسکیم کے تحت آئے۔ مگر وہ اپنے مشن میں کامیاب نہیں ہوئے۔ خود پکڑے گئے اور کئی سال فرانس کی ایک جیل میں گذارے۔شابور بختیار کے سمیت کئی اپوزیشن رہ نماؤں کو ایرانی انٹیلی جنس اداروں کے ایجنٹوں نے دوسرے ملکوں میں قتل کیا، ان میں کرد رہ نما عبدالرحمان قاسملو کو آسٹریا میں جب کہ صادق شرفکندی اور اس کے دو ساتھیوں کو جرمنی میں، سابق بادشادہ کے مقرب فن کار فریدون فرخ زاد کو بھی بیرون ملک ایک کارروائی کے دوران ہلاک کیا گیا۔

مزید :

عالمی منظر -