کشمیر کا مسئلہ مذاکرات سے ہی حل ہو گا: سابق بھارتی وزیر خارجہ

کشمیر کا مسئلہ مذاکرات سے ہی حل ہو گا: سابق بھارتی وزیر خارجہ

  

نئی دہلی(اے این این) مرکز کو ایک مرتبہ پھر کشمیر پر مذاکرات شروع کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے سابق وزیر خارجہ اور سینئر بھاجپا لیڈر یشونت سنہا نے کہا ہے کہ وادی میں جاری خون خرابے پر صرف اور صرف بات چیت کے ذریعے قابو پایا جاسکتا ہے۔ یشونت سنہا نے یہ بات دہرائی ہے کہ کشمیر ایک سیاسی مسئلہ ہے جوایک سیاسی حل کا ہی تقاضا کرتا ہے ۔سینئر بی جے پی لیڈر اور سابق وزیر خارجہ یشونت سنہا نے ایک وفد کی قیادت کرتے ہوئے چند ماہ قبل وادی کے دو الگ الگ دوروں کے دوران مختلف طقہ ہائے فکر سے تعلق رکھنے والے لوگوں کے ساتھ بات چیت کی۔نئی دلی سے جاری کئے گئے بیان میں یشونت سنہا نے یہ بات زور دیکر دہرائی کہ مرکز کو جموں کشمیر میں تمام متعلقین کو شامل کرکے مذاکراتی عمل کا آغاز کرنا چاہئے۔انہوں نے وادی کی موجودہ صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاہم وادی کشمیر کی بگڑتی صورتحال پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہیں ، حالیہ واقعات میں انسانی جانوں کا اتلاف غیر ضروری تھا اور اسے ٹالا جاسکتا تھا۔ یشونت سنہا نے اپنی ٹیم کی طرف سے جاری کردہ بیان میں یہ بات دہرائی کہ جموں کشمیر کا مسئلہ ایک سیاسی مسئلہ ہے اور ایک سیاسی حل کا ہی متقاضی ہے ۔سابق وزیر خارجہ نے مزید کہاموجودہ خون خرابے کا خاتمہ ہونا چاہئے اور صرف مذاکرات ہی اس مقصد کو حاصل کرسکتے ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -