غیرت کا نام پر ملتان میں قندیل بلوچ سمیت 4خواتین جان سے گئیں، کوئی قتل نہیں ہوا، پنجاب پولیس کی سالانہ رپورٹ

غیرت کا نام پر ملتان میں قندیل بلوچ سمیت 4خواتین جان سے گئیں، کوئی قتل نہیں ...

  

ملتان(رپورٹ:شیخ ارسلان )رواں سال کے دوران ضلع ملتان میں غیرت کے نام پر 40 خواتین موت کے گھاٹ اتار دی گئیں۔اس حوالے سے پنجاب پولیس کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں ابہام نظر آتا ہے۔پولیس رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال غیرت کے نام پر فیصل آباد شہر میں سب سے زیادہ خواتین قتل ہوئیں یہ تعداد 31بتائی جاتی ہے۔دوسرے نمبر پرسرگودھا جس میں18خواتین غیرت کے نام پر قتل ہوئیں۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ پنجا ب پولیس کی جاری کردہ رپورٹ جس میں سال2011ء سے 2016ء کا تقابلی جائزہ دیا گیا ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال ملتان میں غیرت کے نام پر ایک بھی خاتون قتل نہیں ہوئی ۔جبکہ زمینی حقائق اس کے برعکس ہیں۔معروف ماڈل قندیل بلوچ سمیت4خواتین گزشتہ سال ضلع ملتان میں غیرت کے نام پر قتل ہوئیں۔رواں سال بھی سلسلہ جاری ہے۔ملتان میں 4مختلف واقعات میں حوا کی بیٹی خاوند کے ہاتھوں نہ صرف تشدد کا نشانہ بنی بلکہ اس کے بال بھی مونڈ دیے گئے۔جبکہ رواں سال کے ڈیڑھ ماہ کے دوران غیرت کے نام پر 4 خواتین کو سفاک شوہروں نے موت کے گھاٹ اتار دیا ۔31جنوری کو مخدوم رشید میں محلہ سادات میں55سالہ سکول ٹیچر پروین اختر کو اس کے شوہر اقبال شاہ نے گلہ دبا کر قتل کیا بعدازاں اس کی لاش چارپائی سے باندھ کر آگ لگا دی،اور فرار ہوگیا،وزیر اعلیٰ پنجا ب کے نوٹس پر پولیس نے ملزم کو گرفتارکرلیا مقتولہ کے بہن نورین کے مطابق اقبال شاہ نے اس کی بہن سے دوسری شادی کی تھی پہلی بیوی سے اس کے پانچ بچے ہیں۔اقبال شاہ نے اپنے بیٹے مزمل اور رشتے دار ممتاز کے ساتھ مل کر اسے قتل کیا ہے۔اسی روز شجاعباد کے علاقے میں دوسرا افسوسناک واقعہ شجاع آباد کے علاقے چھجو شاہ میں ہوا جہاں اسلم نے بدچلنی کے شعبہ میں اپنی بیوی کلثوم کو غیرت کے نام پر کلہاڑی کے وار کر کے قتل کردیا گرفتاری پر ملزم اسلم نے الزام لگایا کہ اسکی بیوی کے صفدر نامی شخص سے ناجائز تعلقات تھے جس کی وجہ سے اپنی بیوی کا قتل کیا۔14فروری کو مخدوم رشید کے علاقے صیام سٹی کے رہائشی واصف نے پولیس کو اطلاع دی تھی کہ اسی کا ہمسایہ نعمان اسی کے گھر میں داخل ہوا ملزم نے فائرنگ کر کے اسی کی بیوی نورین کو قتل کردیا اور پھر فائرنگ کر کے خودکشی کر لی۔بعدازاں دوران تفتیش پولیس نے موبائل ڈیٹا نکلوایا جس میں مقتولہ اور مقتول کے روابط کا انکشاف ہوا۔پولیس نے واصف سے تفتیش کی تو اس نے اعتراف جرم کرلیا۔اس نے بتایا کہ اس کی بیوی کے نعمان سے تعلقات تھے،جس بنا پر اسے غیرت کے نام پر قتل کیا۔بی زیڈ تھانہ کے علاقہ چا ہ بھار و والاکے رہائشی شریف نے اپنی بیوی لعل بی بی کو تعلقات کے شبہ میں سر پر اینٹوں سے وارکیے اور اسے موت کے گھاٹ اتار دیااور خود کو زکریا پولیس کے حوالے کردیا۔شریف کا کہنا تھا کہ اس کی 20سال قبل لعل بی بی سے شادی ہوئی جس سے اس کے پانچ بچے ہیں۔اسے اپنی بیوی کے کردار پر شک تھا،جس پر گھر میں جھگڑا ہوا اور اس نے لعل بی بی کو قتل کردیا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -