سیہون دھماکے کے مزید 3 سہولت کار گرفتار، تعداد 5 ہو گئی

سیہون دھماکے کے مزید 3 سہولت کار گرفتار، تعداد 5 ہو گئی

  

سیہون شریف (خصوصی رپورٹ) درگاہِ قلندر پر ہونیوالے بم دھماکے میں ملوث دہشت گردوں کی گرفتاری کیلئے سکیورٹی فورسز کی تابڑ توڑ کارروائیاں جاری ہیں۔ سندھ اور بلوچستان کے سرحدی علاقے سے مزید تین سہولت کاروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ حبیب، عزیز اور حفیظ اور نامی ملزمان کا تعلق بھی حفیظ بروہی گروپ سے ہے۔ ملزمان سندھ میں کالعدم تنظیم داعش کو منظم کر رہے تھے۔اس سے قبل سکھر کے قریب جوہی سے دو سہولت کاروں کو گرفتار کیا گیا۔ منیر خان اور عزیز جمالی نامی ملزمان پی پی کی ٹکٹ پر ضلع کونسل دادو کے رکن بھی ہیں۔دوسری جانب سانحہ سیہون شریف کی تحقیقات میں ایک اہم پیش رفت بھی ہوئی ہے۔ خودکش حملہ آور کے درگاہ میں داخلے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آگئی۔سولہ فروری کی شام چھ بج کر چھپن منٹ پر خود کش بمبار درگاہ میں داخل ہوا۔ حملہ آور گیٹ پر تعینات پولیس اہلکار کو دیکھ کر پہلے پیچھے ہٹا۔ کچھ دیر بعد وہ پھر آگے بڑھا۔ چیکنگ کے دوران جیسے ہی رش بڑھا، حملہ آور اہلکار کو چکما دے کر درگاہ میں داخل ہو گیا اور خونی کھیل کھیلا۔آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو یقین ہے کہ فوٹیج میں نظر آنے والا ہی خودکش بمبار تھا۔ آئی جی سندھ کا کہنا تھا کہ دھماکے میں انتہائی مطلوب دہشت گرد حفیظ بروہی کے ملوث ہونے کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔

سہولت کار گرفتار

مزید :

صفحہ اول -