پنجاب میں دہشتگردوں کی نرسریاں موجود ہیں: خورشید شاہ

پنجاب میں دہشتگردوں کی نرسریاں موجود ہیں: خورشید شاہ

  

سکھر(اے این این )قومی اسمبلی میں قائدحزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہاہے کہ پنجاب میں دہشت گردوں کی نرسریاں موجود ہیں ، نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد نہیں ہورہا اور وزیراعظم نواز شریف نے اس کا اعتراف بھی کیا،دنیا کے کئی ممالک پاکستان سے خوفزدہ ہوکر اسے غیر مستحکم کرنے کی کوشش میں مصروف ہیں ، دشمن پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہا ہے ،حکومت پابندی والی تنظیموں سے مذاکرات کر رہی ہے۔ سکھر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہاکہ پاکستان کو موجودہ کمزور خارجہ پالیسی کی وجہ سے مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ،پاکستان کی خارجہ پالیسی بالکل ناکام ہو چکی ہے جبکہ داخلہ امور کی صورت حال بھی سب کے سامنے ہے موجودہ صورت حال میں داخلہ اور خارجہ پالیسی کو ایک پیج پررکھ کر تشکیل دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا ہمیں نیوکلیئر پاور سمجھتی ہے اور اسی ڈر سے دشمن ہمیں غیر محفوظ کرنا چاہتا ہے جن کو پاکستان کی ترقی پسند نہیں وہ بھی پاکستان کو غیر محفوظ کرنا چاہتے ہیں اور بہت سے لوگوں کو یہ ڈر بھی ہے کہ پاکستان میں خوشحالی آئی تو یہاں سرمایہ کاری ہو گی اور یہ ملک آگے بڑھ کر دنیا کی توجہ کا مرکز بن جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے پیچھے ملوث عناصر کا پتہ لگانا ہو گا جب کہ پڑوسی ممالک کے پاکستان کے حوالے سے تحفظات جاننا بھی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں رینجرز اختیارات کی توسیع میں تاخیر پر تو شور شرابا ہوتا ہے لیکن پنجاب کے حوالے سے کوئی بات نہیں ہوتی جہاں دہشت گردوں کی نرسریاں ہیں ۔انہوں نے کہاکہ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد نہیں ہورہا اور وزیراعظم نواز شریف نے بھی اس کا اعتراف کیا،حکومت کالعدم تنظیموں سے مذاکرات کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دشمن پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی سازش کر رہا ہے، لوگوں میں خوف و ہراس پھیلایا جا رہا ہے کہ مسجدوں، سکولوں اور دفاتر میں نہ جائیں اور ہمارے پڑوسی ممالک بھی یہی چاہتے ہیں کہ پاکستانی قوم اسی طرح ڈر اور خوف میں مبتلا رہے۔

مزید :

ملتان صفحہ اول -