ہمارے لئے صوبے کے تمام اضلاع ایک جیسے ہیں:جسٹس یحییٰ آفریدی

ہمارے لئے صوبے کے تمام اضلاع ایک جیسے ہیں:جسٹس یحییٰ آفریدی

  

پشاور ) سٹاف رپورٹر(چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ پشاور یحیٰ آفریدی 17فروری2017ء کو ضلع ملاکنڈ اور دیر پائین کا دورہ کرنے کے بعد ضل18فروری کو دیر بالا میں ضلعی عدالتوں اور بار ایسوسی ایشن کا دورہ کیا ۔ اس موقع پر چیف جسٹس نے ضلعی عدلیہ دیر بالا کے ججز اور ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں ۔ ضلعی عدلیہ او رباری ایسوسی ایشن نے چیف جسٹس کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا ۔ چیف جسٹس نے ان کے مسائل غور سے سنے اور ان کی جلد حل کی یقین دہانی کرائی ۔ انہوں نے ضلعی عدلیہ اور بار ایسوسی ایشن کو تاکید کی کہ اپنی فرائض میں کوئی کوتاہی نہ بھرتیں اور فرائض پوری تندہی اور دیانتداری کے ساتھ انجام دیا کریں ۔انہوں نے کہا کہ دور دراز او رپسماندہ علاقوں میں جو ججز صاحبان خدمات انجام دے رہیں وہ وہ تعریف کے مستحق ہیں ۔انہوں نے یہاں کے عوام کی سہولت کے لئے دیر بالا اور واڑی میں جوڈیشل کمپلیکس تعمیر کرنے کی بھی یقین دہانی کرائی ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے لئے صوبے کے تمام اضلاع ایک جیسے ہیں اور پسماندہ علاقوں کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہم سب کی ذمہ داری ہے ۔ انہو ں نے ججز صاحبان کو تاکید کی کہ مقدمات کی جلد تصفیہ کے لئے اپنا مثبت کردار ادا کریں ۔ چیف جسٹس نے ایڈیشنل سیشن جج ملاکنڈ افتخار الہٰی کی تعریف اور مقدمات کو نمٹانے کے لئے ویڈیو لنک اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے استعمال کو سراہا ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ جوڈیشری سے کرپشن کو جڑ سے ختم کرنے کے لئے ان کی جدوجہد جاری ہے ۔ انہوں نے کہا جونیئر وکلاء اور ججز کو تربیتی ٹریننگ دینے کے لئے اقدامات کئے جار ہے ہیں انہو ں نے کہا کہ ملاکنڈ ڈویژن میں شرعی نظام عدل ریگولیشن نافذ ہے اس لئے یہاں ججز کی تعداد میں اضافہ ناگزیر ہے اور اس سلسلے میں حکومت سے رابطے میں ہیں ۔ انہو ں نے کہا کہ دیر بالا، شانگلہ ، کوہستان ، ٹانک ، چترال اور دیگر پسماندہ اور دشوار گزار علاقوں میں ڈیوٹیاں انجام دینے والے ججز کو بیرونی ممالک کے دوروں پر بھیجنے کا اہتمام کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے ججز صاحبان کو یقین دہانی کرائی کہ تمام ججز شوار گزار علاقوں میں باری باری ڈیوٹیاں انجام دیں گے اور ا س اسلسلے میں کسی کو استثنیٰ حاصل نہیں ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ معیار اور میرٹ فیصلے دینے والے ججز کو قابلیت کے بنیاد پر سکالر شپ دی جائے گی ۔ انہو ں نے کہا کہ بار اور بینچ میرے لئے قابل قدر ہیں اور چاہتا ہوں کہ بار اور بینچ کے لوگوں کو سستی انصاف کی فراہمی میں اپنا کردا رادا کروں ۔ اس موقع چیف جسٹس نے دیر بالا کے لئے جوائنٹ ضلعی لائبریری برائے ججز و وکلاء کی منظور بھی دی ۔ چیف جسٹس نے حالیہ بم دھماکوں میں شہید ہونے والوں کے لئے خصوصی دعا کی اور بار صدر کا شکریہ ادا کیا ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -