سندھ کی عوام کو حقوق کے لئے کھڑا ہونا چاہئے، سینیٹر نہال ہاشمی

سندھ کی عوام کو حقوق کے لئے کھڑا ہونا چاہئے، سینیٹر نہال ہاشمی

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) مسلم لیگ ن سندھ کے سیکریٹری جنرل سینیٹر نہال ہاشمی نے کہا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ سندھ کے لوگوں کو اپنے حقوق کے لئے کھڑا ہوجانا چاہئے کیوں کہ سندھ کے لوگ انتہائی بدحال ہیں انھیں کوئی بھی بنیادی سہولت میسر نہیں ہے، سندھ کے لوگوں کا یہ حال ہے کہ سانحہ لال شہباز قلندرکے موقع پر بڑی تعداد میں لوگوں کی جانیں بچائی جاسکتی تھیں لیکن ٹوٹی سڑکوں، اسپتالوں کی خراب صورتحال کی زخمیوں کو بروقت اسپتال نہیں لیجایا جاسکا، لیکن سندھ کے عوام خود کو تنہاء نہ سمجھیں ان کے ساتھ وزیر اعظم نواز شریف کھڑے ہیں، سانحہ سہون شریف کی وجہ سے مسلم لیگ ن سندھ نے کراچی اور حیدرآباد میں ہونے والے درکرز کنوینشن ملتوی کردیئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر ان کے ہمراہ اسد عثمانی،اشتیاق احمد، عصمت محمود، سعد اللہ خان، مسلم لیگ ن کے دیگر رہنما شامل تھے۔ نیٹر نہال ہاشمی نے کہا کہ کراچی اور حیدرٓآباد میں ہونے والے ورکرز کنوینشن کے انعقاد کی نئی تاریخ کا اعلان کردیا جائے گا۔ سانحہ سہون شریف کا سانحہ اتنا بڑا ہے کہ اسے الفاظ میں بیان نہیں کیا جاسکتا، انھوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ سندھ کے لوگوں کو اپنے حقوق کے لئے کھڑا ہوجانا چاہئے، چالیس سال پہلے جو روٹی کپڑا مکان کا نعرہ لگایا گیا تھا وہ تو لوگوں کو نہیں دیا گیا لیکن عوام کے سروں سے چھت، روٹی،اور بدن سے کپڑا چھین لیا گیا، اور اب تو یہ حال ہوگیا ہے لوگوں کی جانیں بھی محفوظ نہیں ہیں،اسپتالوں میں لوگوں کے لئے کوئی سہولت موجود نہیں، ایمبولینیسیں نہیں، ٹوٹی پھوٹی سڑکیں ہیں، لوگوں کی جانیں بچانا تو دور کی بات سانحہ میں شہید ہونے والے افراد کے جسمانی اعضاء کچرے کے ڈھیر میں پھینک دیئے گئے۔انھوں نے کہا کہ حکومت کے وزراء لوگوں کو دیکھنے کے لئے اسپتالوں میں بھی نہیں گئے۔ کہاں ہیں سندھ کے وزیر بلدیات اور وزیر صحت،انھوں نے کہا کہ وزیر اعظم نواز شریف سندھ کے لوگوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور سندھ میں 500اور ڈھائی سوبیڈ کے اسپتالوں کا جال بچھانے کا منصوبہ بندی کی گئی ہے، اس کے علاوہ سندھ مزید موٹر وے بنائے جائیں گے۔اور جلد سندھ کے دورے پر آئیں گے ۔ انھوں نے کہا کہ سندھ کے ترجمان مولابخش چانڈیو کا شائد زیادہ عمر کا مسئلہ ہے میں سمجھتا ہوں کہ انھیں علاج کی ضرورت ہے۔سندھ حکومت بری طرح ناکام ہوئی ہے اور وہ وفاقی حکومت پر الزامات لگارہے ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -