حکومت کی اشتہاری مہم لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دی گئی

حکومت کی اشتہاری مہم لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دی گئی
حکومت کی اشتہاری مہم لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دی گئی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )وفاقی حکومت اور پنجاب حکومت کی پالیسی کے بغیر اشتہاری مہم لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دی گئی ہے.

سیکیورٹی خدشات ،ججوں کی نقل و حرکت محدود ،حفاظتی عملہ کی تعداد دو گنا کردی گئی

آئینی درخواست میں کہا گیا ہے کہ اشتہارات کے ذریعے حکومتی کارکردگی کی بجائے شخصیات کی تشہیر کی جا رہی ہے۔یہ آئینی درخواست شہری انعام اکبر نے سعد رسول ایڈووکیٹ کی وساطت سے دائر کی گئی ہے، درخواست میں کہا گیا ہے کہ حکومتیں پالیسی کے بغیر میڈیا کو بلاجواز اشتہارات جاری کر رہی ہیں، اشتہارات کے ذریعے حکومتوں نے عوام کے اربوں روپے ضائع کر دیئے، پاکستان میں آج تک حکومتوں کی میڈیا کیلئے اشتہارات پالیسی نہیں بنائی گئی، درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ اشتہارات کے ذریعے حکومتیں میڈیا کو ناقص کارکردگی کی خبریں دبانے کا کہتی ہیں اور اشتہارات کے ذریعے حکومتی کارکردگی کی بجائے شخصیات کی تشہیر کی جا رہی ہے، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ وفاقی اور صوبائی حکومت کو میڈیا کیلئے اشتہارات پالیسی بنانے کا حکم دیا جائے اور دس برسوں کے دوران پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا کو جاری اشتہارات کا ریکارڈ طلب کیا جائے، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت بلاپالیسی وفاقی اور صوبائی حکومت پر اشتہارات جاری کرنے پر پابندی عائد کرے

مزید :

لاہور -