اسرائیلی فوج نے ظلم کی نئی داستان رقم کردی، غزہ میں زہریلا سپرے کر کے کھڑی فصلیں تباہ کردیں

اسرائیلی فوج نے ظلم کی نئی داستان رقم کردی، غزہ میں زہریلا سپرے کر کے کھڑی ...
اسرائیلی فوج نے ظلم کی نئی داستان رقم کردی، غزہ میں زہریلا سپرے کر کے کھڑی فصلیں تباہ کردیں

  

یروشلم (ڈیلی پاکستان آن لائن) اسرائیلی صیہونی یہودیوں کی جانب سے گزشتہ 7 دہائیوں سے لاچار فلسطینیوں پر ظلم کے پہاڑ توڑے جا رہے ہیں لیکن اب ان یہودیوں نے ایک قدم آگے بڑھاتے ہوئے فلسطینی مسلمانوں کو بھوکا مارنے کی منصوبہ بندی کرلی ۔

الجزیرہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج کی جانب سے سبزی کی کھڑی فصلوں پر ایسا سپرے کردیا گیا جس کی وجہ سے یہ کھانے کے قابل نہیں رہیں اور تیزی سے سوکھنے لگی ہیں۔ بیچارے لاچار کسانوں کو اسرائیل کی جانب سے سپرے کیے جانے کے بعد یہ فصل اکھاڑ کر پھینکنی پڑ گئی ہے۔

دنیا کا امیر ترین آدمی جس کے پاس بل گیٹس سے 2 گنا زیادہ دولت ہے لیکن اب تک کسی کو اس بارے میں معلوم نہ تھا، یہ آدمی کون ہے؟ جواب جان کر آپ کی حیرت کی انتہا نہ رہے گی

مقامی سیاسی رہنما حزم ابو حداد کا کہنا ہے کہ اسرائیل کی جانب سے عین اس وقت زہریلا سپرے کیا گیا جس وقت فصلیں پک کر تیار ہو چکی تھیں۔ اسرائیل کی جانب سے کیے جانے والے سپرے کے باعث کسانوں کو ایک ملین ڈالر سے زائد کا نقصان برداشت کرنا پڑا ہے۔اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ انہوں نے غزہ کی پٹی پر 300 میٹر کی حدود میں زہریلا سپرے کیا ہے کیونکہ یہ سیکیورٹی کیلئے بے حد ضروری تھا۔

’ہماری مذہبی کتاب کے مطابق اس برس قیامت آنے والی ہے کیونکہ یہ سب سے بڑی نشانی پوری ہوگئی‘ ایسا اعلان ہوگیا کہ دنیا بھر کے لوگوں کو پریشان کردیا

کسان ویل شامی کا کہنا تھا کہ میرا خاندان 11 افراد پر مشتمل ہے جبکہ بہت سے دیگر لوگوں کا روزگار بھی میرے کھیتوں میں کام کرنے سے چلتا ہے لیکن اسرائیلیوں نے سب برباد کردیا۔ اسرائیلیوں کے اس ظالمانہ اقدام کے باعث مجھے 10 لاکھ روپے کا نقصان برداشت کرنا پڑا ہے جبکہ مجھ پر بہت سا قرضہ بھی چڑھ گیا ہے۔

مقامی کسانوں کو اس سپرے کے دور رس اثرات کا بھی خطرہ ہے، انہیں نہیں پتا کہ یہ کس قسم کا کیمیکل تھا اور آیا کہ ایک فصل تباہ کرنے کے بعد اس کے اثرات ختم بھی ہو جائیں گے یا اس سپرے سے زمین مکمل طور پر ہی بنجر ہوچکی ہے۔

مزید :

عرب دنیا -