ڈاکٹر علی یاسر عبداللہ حسین کی یاد میں لیکچر اورمشاعر ہ“کا انعقاد

  ڈاکٹر علی یاسر عبداللہ حسین کی یاد میں لیکچر اورمشاعر ہ“کا انعقاد

  

کراچی (پ ر)اکادمی ادبیات پاکستان کراچی کے زیراہتمام”مشاعرہ بیادِ رفتگان ڈاکٹر علی یاسرؔ عبداللہ حسین کی یاد میں لیکچر اورمشاعر ہ“کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت پرتگال ڈنمارک سے آئے ہوئے محمد یامین عراقی نے کی۔ اور مہماناں خاص گلگستان بلستان سے آئے ہوئے احسان علی دانش، معروف افسانہ نگار شاعر عرفان علی عابدی تھے۔اس موقع پر صدر محفل محمدیامین عراقینے کہاکہ ڈاکٹر علی یاسرؔنے شاعری کا آغاز ۱۹۹۰؁ء سے کیا شروعات میں اصلاح اپنے داداسے لیتا رہا جب گوجرانوالہ سے اسلام آبادشفٹ ہوئے تو ریڈیو،ٹیلیویژن سے ادبی پروگرامز میں شرکت کی شروعات کیساتھ ہی اکادمی ادبیات اسلام آباد میں بطور اسسٹنٹ ائریکٹر ملازمت اختیار کی اوریوں اپنی شاعری کے ذریعے ملک کے تمام ادبی حلقوں میں اپنا رنگ جمالیا آپ بے پناہ محبت کرنے والے شخصیت تھے۔اس موقع پر عرفان علی عابدی نے کہاکہ ڈاکٹر علی یاسر ؔ نظریاتی طور پر مستحکم ارادوں کا مالک تھا اس سلسلے میں وہ کسی کو رعایتی نمبر دینے کا عادی نہیں تھا آپ سچا تخلیق کار تھا اور اپنی تخلیق کو منظر عام پر لانے کیلئے کسی طرح کی بھی منصوبہ بندی نہیں کرتاتھا بلکہ یہ کہا جائے کہ اس حوالے سے اس کی شخصیت بہت ہی ناموزوں تھی تو غلط نہیں ہوا۔ اس موقع پر احسان علی دانش نے کہا کہ اردو ادب کی اصناف میں ناول نگاری نظر اندازکی جانے والی صنف شمار ہوتی ہے۔ انگلیوں پر گنے جاسکتے ہیں و ہ ناول جواردو کی مختصر عمر میں لکھے گئے۔ پہلاناول ڈپٹی نذیر احمد کے ’مراۃ العروس‘ کو مانا جاتا ہے جو ۱۸۶۹؁ء میں منظر عام پر آیا۔یوں اردو میں ناول نگارکی عمر ڈیڑھ صدی سے بھی کم بنتی ہے۔ اس عرصے میں جو ناول سامنے آ ئے، ان میں سے اگر عالمی ادبی معیار کے ناول الگ کیے جائیں تو لامحالہ تعداد مزید سکڑ جائے گی۔ اردو میں جن چند ناول نگار وں نے عالمی ادبی معیار کی تحریروں سے ادب کے چمن زار کی رونق کوبڑھایا اورعالمی سطح پر شہرت حاصل کی،ان میں ایک نہایت اہم اور معتبر نام عبداللہ حسین کا ہے۔عبداللہ حسین بلاشبہ پاکستان کے سب سے بڑے ناول نگار تھے۔ انہیں ان کی ادبی خدمات پر اکادمی ادبیات پاکستان کی طرف سے پاکستان کا سب سے بڑا ادبی ایوارڈ کمالِ فن بھی دیا گیاتھا۔ ۵ جولائی ۲۰۱۵ ء کو وہ ہم سے بچھڑگئے۔ عبداللہ حسین ایسے صاحب کمال ناول نگار، افسانہ نویس،ادیب مترجم تھے جنہیں عالمی سطح پر بھی شہرت حاصل تھی۔ عبداللہ حسین نے اپنے افسانوں اور ناولوں کے وسیلے سے پاکستانی نثری ادب کو بہت عظمت اور فضیلت بخشی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -