چین کو کرونا وائرس کے خلاف مشکل وقت کا سامنا ہے،پاکستان کی مشکل وقت میں بھرپور حمایت پر شکرگزار ہیں:چینی سفیر یاؤ جنگ

چین کو کرونا وائرس کے خلاف مشکل وقت کا سامنا ہے،پاکستان کی مشکل وقت میں ...
چین کو کرونا وائرس کے خلاف مشکل وقت کا سامنا ہے،پاکستان کی مشکل وقت میں بھرپور حمایت پر شکرگزار ہیں:چینی سفیر یاؤ جنگ

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)چینی سفیر یاؤ جنگ نے کہاہے کہ چین کو کرونا وائرس کے خلاف مشکل وقت کا سامنا ہے،پاکستان کی مشکل وقت میں بھرپور حمایت پرشکرگزار ہیں،کرونا وائرس کے حوالے سے صورتحال لمحہ بہ لمحہ تبدیل ہو رہی ہے،ووھان اور دیگر علاقوں میں پاکستانی طلبہ کاچینی عوام کی طرح خیال رکھ رہے ہیں ، ہمارے تعلقات کی بنیاد انتہائی مضبوط ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ چین اس وقت ایک مشکل ترین دور سے گزر رہا ہے،چین کو کرونا وائرس کے خلاف مشکل وقت کا سامنا ہے ،پاکستان کی اس مشکل وقت میں بھرپور حمایت پرشکرگزارہیں،کرونا وائرس کےحوالے سے صورتحال لمحہ بہ لمحہ تبدیل ہو رہی ہے،چین میں پاکستانی طلبہ کے حوالے سے سہولیات فراہم کر رہے ہیں،ووھان اور دیگر علاقوں میں پاکستانی طلبہ کا چینی عوام کی طرح خیال رکھ رہے ہیں،ہمارے تعلقات کی بنیاد انتہائی مضبوط ہے ، ہمیں فخرہےکہ عالمی برادری میں پاکستان چین کانمبرایک دوست ہے،پاکستان اورچین نہ صرف اکٹھےرہتےہیں بلکہ قدرت نےہمیں جغرافیائی طورپراکٹھاکیا ہے ، 1963 میں ہمارے تعلقات قائم ہوئے،پاکستان سے دوستی ہماری ہالیسی میں شامل ہے اور ہم ایک دوسرے کو سمجھتے اورسپورٹ کرتےہیں،پاکستان اورچین کا ایک مشترکہ مقصد قوموں کی تعمیر ہےجس میں ہم بطور شراکت داراکٹھے ہیں،ہم بطورشراکت دار اقتصادی و سوشل ترقی, خوشحالی اور علاقائی امن میں اکٹھے ہیں، جب پاکستان اور چین کا ایسا تعلق ہو تو وہ قدرتی طور پر دیگر ممالک کی توجہ کا باعث بنے گا،امریکہ نے اپنی انڈو چائنا پالیسی میں چین کو اپنا دشمن اور علاقائی تزاویراتی حریف قرار دیا ہے حتی کہ ان کی یہ سوچ حقایق کے منافی ہے۔

یاؤ جنگ نے کہاکہ 2013 سے دونوں ممالک نے سی پیک کا باہمی تعاون شرو ع کیا،سی پیک میں سولہ منصوبے مکمل ہو چکے ہیں جن میں موٹرویز کی اَپ گریڈیشن اور گوادر پورٹ کی تعمیر شامل ہے،سی پیک چین اور پاکستان کی شراکت داری کابڑا حصہ ہے،سی پیک کے آئندہ مرحلے میں مختلف شعبوں میں مشاورت کے بعد نئے منصوبے شروع کیے جا رہے ہیں،نئے مرحلے میں مین لینڈ ریلوے کا اہم منصوبہ شامل ہے جو طویل المدت ہے،اس میں ریلوے ٹریک کی اپ گریڈیشن اور اس کی رفتار میں اضافہ ہے،اس مرحلے میں توانائی کے نئے منصوبے بھی شروع کئے جائیں گے،وزیر اعظم عمران خان سمجھتے ہیں کہ ان منصوبوں میں نجی سرمایہ کاری بھی ہونا چاہیے،نئی حکومت کی نظر میں دونوں ممالک میں صنعتی تعاون کے فروغ کو مزید توسیع دی جا رہی ہے،زراعت کے حوالے سے وزیراعظم عمران خان بہتری کے خواہشمند ہیں،اس حوالےسےحکومت تاحکومت اوربزنس ٹوبزنس تعاون شروع کیا گیا ہے، بزنس ٹو بزنس میں مختلف چینی کمپنیاں لائیو سٹاک اور زراعت کے حوالے سے سرمایہ کاری کریں گی۔

مزید : قومی