پرائیویٹ تعلیمی اداروں پر مزید بوجھ ڈالنا ناانصافی ہے،مزمل اقبال

پرائیویٹ تعلیمی اداروں پر مزید بوجھ ڈالنا ناانصافی ہے،مزمل اقبال

لاہور( پ۔ر) پروگریسوپرائیویٹ سکولز ایسوسی ایشن نے حکومت سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ حکومت تعلیم دوستی کا ثبوت دیتے ہوئے تعلیم کے مزید فروغ کیلئے زیادہ سے زیادہ فنڈز مختص کرے تاکہ متوسط طبقہ کا بچہ بھی تعلیم کے زیور سے آراستہ ہوسکے۔ اجلاس کی صدارت پی ایس اے کے مرکزی صدر مزمل اقبال صدیقی نے کی جبکہ دیگر عہدیداروں میں مرکزی جنرل سیکرٹری شیخ محمد ارشد، صادق صدیقی، اجمل اشفاق، امتیاز شاہین، میاں اسحاق، محمد ندیم، رضوان یوسف، راحیل بھی شامل تھے۔ اجلاس میں بجلی ، سوئی گیس کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر تشویش کا اظہار کیا گیا اور مطالبہ کیا گیا کہ تعلیمی اداروں کو اس سے مستثنیٰ قرار دیا جائے۔

اجلاس میں کہا گیا کہ حکومت اپنے خزانے کی تجوریاں بھرنے کیلئے آئے روز پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو اپنا ذریعہ آمدن بنانا چاہتی ہے اور یہی تعلیم دشمنی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 23 قسم کے مختلف ٹیکسز ادا کرنے والے پرائیویٹ تعلیمی اداروں پر مزید بوجھ ڈالنا سراسر ناانصافی ہے۔ اجلاس میں مزمل اقبال صدیقی اور شیخ ارشد نے مزید بتایا کہ پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے خلاف منفی پراپیگنڈہ گہری سازش ہے۔ حالانکہ حقیقت اس کے برعکس ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم وزیر اعلیٰ پنجاب کے ویژن پڑھو پنجاب اور بڑھو پنجاب پر اتفاق کرتے ہیں لیکن اس ویژن کو فروغ دینے کیلئے کمرشلائزیشن کو ختم کرنا ہوگا اور نرم پالیسیاں اپنانا ہونگی۔ اجلاس میں مطالبہ کیا گیا کہ پارٹنرز کے بقایا جات بلاتاخیر ادا کئے جائیں تاکہ تعلیمی ادارے مزید مالی مشکلات کا شکار نہ ہوں۔ انہوں نے کہا کہ ہم پورے پنجاب میں اپنے معزز ممبرز کے حقوق کیلئے جدوجہد جاری رکھے ہوئے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ہماری ایسوسی ایشن کی ممبر شپ میں دن بدن اضافہ ہوتا چلا جارہا ہے کیونکہ ہمارا مشن خدمت ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4