کم عمری کی شادیوں کی روک تھام کیلئے فوری قانون سازی کی جائے، حنا بٹ

کم عمری کی شادیوں کی روک تھام کیلئے فوری قانون سازی کی جائے، حنا بٹ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(لیڈی رپورٹر)مسلم لیگ ن کی رکن پنجاب اسمبلی حنا پرویز بٹ نے کم عمری کی شادیوں کی روک تھام کیلئے فوری قانون سازی کرنے کے مطالبے کی قرارداد پنجاب اسمبلی میں جمع کرادی،اس حوالے سے صوبے بھر میں فوری ایمر جنسی ناقض کی جائے ۔یہ ایوان حکومت سے اس امر کی سفارش کرتا ہے کہ کم عمری کی شادیوں کی روک تھام کیلئے فوری طور پر قانون سازی کی جائے۔شادی کی کم از کم عمر 18سال مقرر کی جائے ۔پنجاب کے بعض اضلاع میں چھوٹی عمر میں ہی لڑکیوں کی شادی کا رواج عام ہے۔چھوٹی عمرمیں شادی کی وجہ سے بیشترشادیاں کامیاب نہیں ہوتی ۔جبکہ لڑائی جھگڑے بھی معمول کی بات بن جاتے ہیں ۔لہذا یہ ایوان حکومت سے مطالبہ کرتا ہے کہ اس حوالے سے صوبے بھر میں ایمرجنسی نافض کی جائے ۔کم عمری کی شادیوں کے حوالے سے فوری طور پر قانونی مسوادہ تیار کیا جائے اور اس کی منظوری اسمبلی سے لی جائے ۔حکومتی سطح پر کم عمری کی شادیوں کی روک تھام کیلئے صوبے کے تمام اضلاع میں سرکاری سطح پر کمپئین چلائی جائے ۔خصوصا سر کاری و نجی گرلز تعلیمی اداروں کو فوکس کیا جائے۔