ایگری ٹریڈ سنٹر میں بڑے پیمانے پر کرپشن کی تحقیقات کا مطالبہ

ایگری ٹریڈ سنٹر میں بڑے پیمانے پر کرپشن کی تحقیقات کا مطالبہ

  

ٹانک(نمائندہ خصوصی)ایگری ٹریڈ سنٹر میں بڑے پیمانے پر ہونے والی کرپشن کی اعلی سطح تحقیقات کی جائے جنوبی وزیرستان ایجنسی کی کرپٹ ضلعی انتظامیہ کی بے تحاشا کرپشن نے حکومتی بنیادوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے ان خیالات کا اظہار قبائلی رہنماء ملک اے ڈی خان محسود نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ وانہ ایگری ٹریڈ سنٹر افواج پاکستان کی جانب سے جنوبی وزیرستان کی عوام کے لئے ایک تحفہ تصور کیا جاتا ہے جو ایک ارب روپے کی لاگت سے تعمیر کیا گیا تھا لیکن بدقسمتی سے جنوبی وزیرستان کی ضلعی انتظامیہ نے ایگری ٹریڈسنٹرکا ٹھیکہ لینے والے ٹھکیدار کو ٹھیکہ سے سے بے دخل کر کے بغیر ٹینڈر لگائے انتظامیہ خود دوکاندار بن کر ایگری پارک کے ٹیکس خود بٹور نے میں لگی ہوئی ہے ضلعی انتظامیہ کے اندرونی ذرائع کے مطابق مذکورہ ٹریڈ سنٹر کی ٹیسکوں کی مدات میں حاصل ہونے والی 32کروڑروپے کی خطیر رقم خرد بردکر کے آپس میں بانٹ دی گئی ہے کرپشن کی وجہ سے مثالی ایگری ٹریڈ سنٹر تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا ہے اور اسی وجہ سے ضلعی انتظامیہ کرپشن کے باعث حکومت کے ماتھے پر بدنامی کا داغ بن رہی ہے انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں میں عمران خان کے ترقیاتی ویژن کو انتظامیہ نست و نابود کر رہی ہے انہوں نے وزیر اعظم عمران خان ،گورنر اور وزیر اعلی خیبر پختون خواہ سے مذکورہ ٹریڈ سنٹر میں ہونے والی کرپشن کو منظر عام پر لانے اور ملوث افسران کو احتساب کے شکنجے میں جکڑنے کے لئے فوری طور پر اعلی سطح تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دینے کا مطالبہ کیا ہے۔۔۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -