حکمرانوں کو خود پر اعتماد نہیں حکومت صابن پر کھڑی ،کسی وقت بھی پھسل سکتی ہے،سراج الحق

حکمرانوں کو خود پر اعتماد نہیں حکومت صابن پر کھڑی ،کسی وقت بھی پھسل سکتی ...

  

لاہور( نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ حکومت صابن پر کھڑی ہے، کسی وقت بھی پھسل سکتی ہے۔قبل از وقت انتخابات کی بات اپوزیشن کی طرف سے نہیں ، خود وزیراعظم کی طرف سے آئی ، جس سے پتہ چلتاہے کہ حکمرانوں کو خود اپنے آپ پر بھی اعتماد نہیں رہا کہ وہ ڈلیور کر سکیں گے۔ملک میں چھ کروڑ مزدوروں کا کوئی پرسان حال نہیں۔ آئین میں موجود لیبر قوانین کو مسلسل انداز کیا جارہاہے۔ نیشنل لیبر فیڈریشن ملک بھر کے مزدوروں کی نمائندہ تنظیم ہے جس کے ساتھ 323 لیبر یونینز کا الحاق ہے۔ 2019 ء کو مزدوروں کے سال کے طور پر منائیں گے۔ لیبر قوانین ناقص ہیں۔ یہ قوانین مزدروں کے حقوق کا تحفظ کرنے کی بجائے جاگیرداروں ، سرمایہ داروں اور کارخانہ داروں کا تحفظ کرتے ہیں۔ حکومت ایم کیو ایم سمیت چند دوسری جماعتوں کے سہارے پر کھڑی ہے ایم کیو ایم ہر حکومت میں شامل رہی ہے اور ان کا حکومت سے ایک ہی مطالبہ ہوتاہے کہ اسے ہر جائز اور ناجائز کام کرنے کا موقع دیا جائے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے منصورہ میں نیشنل لیبر فیڈریشن پاکستان کے نو منتخب صدر شمس الرحمن سواتی کی حلف برداری تقریب کے موقع پر خطاب اور بعد ازا ں میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اسد اللہ بھٹو ایڈووکیٹ ،حافظ سلمان بٹ ، رانا محمود علی اور مرکزی سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف بھی موجود تھے۔ قبل ازیں سینیٹر سراج الحق نے شمس الرحمن سواتی سے صدر لیبر فیڈریشن کا حلف لیا۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ اپوزیشن کی طرف سے حکومت کو گرانے کی اب تک کوئی بات نہیں آئی حکومت خود کشی کی طرف جار ہی ہے اور اگر حکومت نے مہنگائی اور بے روزگاری پر قابو نہ پایا تو عوام اسے زیادہ دیربرداشت نہیں کریں گے اب تو وہ لوگ بھی مایوس ہوچکے ہیں جو بڑی توقعات کے ساتھ حکومت کو لے کر آئے تھے اور جنہوں نے پی ٹی آئی کو ووٹ دیاتھا۔انہوں نے کہاکہ غیر رجسٹرڈ مزدوروں کی رجسٹریشن اور ان کے حقوق کے تحفظ کے لیے این ایل ایف کو آگے بڑھ کر ان کا سہارا بننا ہوگا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ لیبر قوانین میں تبدیلی کر کے غیر رجسٹرڈ مزدوروں کو بھی یونین سازی کا حق دیا جائے۔

مزید :

صفحہ آخر -