نعمت اللہ خان کی پٹیشن قبضہ مافیا اور چائنہ کٹنگ کیخلاف تھی : حافظ نعیم الرحمن

نعمت اللہ خان کی پٹیشن قبضہ مافیا اور چائنہ کٹنگ کیخلاف تھی : حافظ نعیم ...

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ نعمت اللہ خان کی سپریم کورٹ میں دائر پٹیشن قبضہ مافیا ، پارکوں، میدانوں کے پلاٹوں پر قبضہ کرنے اور چائنا کٹنگ کرنے والوں کے خلاف تھی،شہر کو برباد کرنے والے وہ لوگ ہیں جو سپریم کورٹ کے حکم کا ناجائز استعمال کرکے شہر کو برباد اور شہریوں کو بے روزگار رہے ہیں،بلدیہ عظمیٰ کا سالانہ 26ارب روپے کا بجٹ کرپشن کی نذر ہو رہا ہے،میئر کراچی اختیارات کا رونا رو رہے ہیں ۔ ہم پوچھنا چاہتے ہیں کہ جو اختیار آپ کے پاس ہے آپ نے اس میں کتنا کام کیا؟۔جماعت اسلامی سپریم کورٹ میں عوامی مقدمہ لڑے گی اور عوام کو ان کے جائز حقوق دلوائے گی۔اگر آئندہ 48گھنٹوں میں زولوجیکل گارڈن کے متاثرین کو متبادل اور متعین جگہ نہ دی گئی تو جماعت اسلامی دکانداروں کے ساتھ مل کر زبردست احتجاج کرے گی اور انہیں ان کا حق دلوائے گی ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے زولوجیکل گارڈن کے متاثرین کے کیمپ پر ان سے ملاقات ، اظہاریکجہتی اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر اسمال ٹریڈرز کاٹیج اینڈ انڈسٹریز کے صدر محمود حامد ، گارڈن ایسوسی ایشن کے صدر آصف شہزاد اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ زولوجیکل گارڈن کے متاثرین نے حافظ نعیم الرحمن کو بتایا کہ کے ایم سی کی جانب سے دکانداروں کو 30دن میں دکانیں خالی کرنے کا کہا گیا تھا لیکن ابھی 14دن ہی گزرے تھے کہ ہمارے دکانیں مسمار کردی گئیں اور ہم سے کہا گیا کہ ہمیں متبادل جگہیں دی جائیں گی لیکن ابھی تک متبادل جگہوں کا بھی کوئی بندوبست نہیں کیا گیا ۔ حافظ نعیم الرحمن نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ کراچی کی سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں۔ لوگوں کو روزگار میسر نہیں ہے اور میئر کراچی بلڈوزر چلا کر عوام سے ان کا روزگار چھین رہے ہیں۔ ہم میئر کراچی سے پوچھنا چاہتے ہیں کہ بابر غوری ، خواجہ اظہار الحسن کے قبضہ شدہ پلاٹوں کو کب مسمار کیا جائے گا؟۔ سپریم کورٹ کے حکم میں کہیں بھی ایمپریس مارکیٹ، کھوڑی گارڈن سمیت زولوجیکل گارڈن کا نام نہیں تھا یہ کھلی دہشت گردی ہے جسے عوام کسی صورت برداشت نہیں کر سکتے۔ انہوں نے متاثرین سے کہاکہ آپ کسی جھوٹے کی باتوں میں نہ آئیں ، آپ نے اپنے اتحاد سے ان ظالموں کو شکست دینا ہوگی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -