لوگوں کو معیاری طبی سہولیات فراہم کرنے میں غفلت برداشت نہیں کی جائیگی ‘ حنیف پتافی

لوگوں کو معیاری طبی سہولیات فراہم کرنے میں غفلت برداشت نہیں کی جائیگی ‘ ...

راجن پور(ڈسٹرکٹ رپورٹر ‘نا مہ نگا ر)وزیر اعلیٰ پنجاب کے مشیر برائے صحت حنیف خان پتافی نے کہا ہے کہ حکومت پنجاب لوگوں کو بہترین طبی سہولیات فراہم کرنے کے انقلابی اقدامات کررہی ہے۔ لوگوں کو معیاری اور مفت طبی سہولیات فراہم کرنے میں کسی قسم کی غفلت برداشت نہیں کی جائے گی۔ یہ باتیں انہوں نے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر اسپتال راجن پور اور دیہی مراکز صحت محمدپورو فاضل پور کے (بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

اچانک دورہ کے موقع پر کیں۔ انہوں نے دیہی مراکز صحت محمدپورو فاضل پور میں کتے اور سانپ کے کاٹنے کی ویکسین کی عدم دستیابی اور ادویات کا مناسب اسٹاک نہ ہونے پر ناراضگی کا اظہار کیا اور چیف ایگزیکٹو ہیلتھ راجن پور فوری طور پر ویکسین اور ادویات کا اسٹاک مکمل کرکے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔ بعد ازاں انہوں نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال راجن پور کے دورہ کے دوران اسپتال میں علاج معالجہ کے لیے آئے مریضوں کی عیادت کی اور انہیں بہترین طبی سہولیات فراہم کرنے کی بھی ہدایات دیں۔دریں اثناء وزیر اعلیٰ پنجاب کے مشیر برائے صحت حنیف خان پتافی نے کہا ہے کہ حکومت پنجاب گنے کے کاشتکاروں کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے شوگرملز مالکان کو اربوں روپے کی سبسڈی فراہم کررہی ہے۔ اور شوگرملز انتظامیہ کو کاشتکاروں کو معاشی استحصال نہیں کرنے دیا جائے گا۔ یہ بات انہوں نے ڈپٹی کمشنر آفس میں اس حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیں۔ اس مو قع پر ڈپٹی کمشنر راجن پور محمد الطاف بلوچ، مقامی ممبر صوبائی اسمبلی پنجاب سردار فاروق امان اللہ دریشک، ڈی پی او راجن پور ہارون رشید، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو رانا افضل ناصر، اسسٹنٹ کمشنر راجن پور لیاقت علی گیلانی، ڈی ایس پی صدر مجاہد اقبال برمانی،ممبران قومی اسمبلی کے نمائندگان ، متعلقہ محکموں کے افسران اور انڈس شوگر ملز راجن پور کے جنرل منیجر بھی اجلاس میں شریک ہوئے۔ ڈپٹی کمشنر نے مشیرِ صحت کو کسانوں کوریلیف پہنچانے کے لیے ضلعی انتظامیہ کی طرف سے کیے گئے اقدامات بارے آگاہ کیا۔ اس موقع پر حنیف خان پتافی نے کہا کہ تمام شوگر ملز گنے کے کاشتکاروں کو 15یوم کے اندر ادائیگی کی پابند ہیں۔ اور حکومت تمام کاشتکاروں کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے کے پوری طرح سنجیدہ ہے ۔

حنیف پتافی

مزید : ملتان صفحہ آخر