سانحہ ساہیوال، حامد میر نے یہ تصویر دیکھی تو غصے میں آ گئے، کھری کھری سنا دیں

سانحہ ساہیوال، حامد میر نے یہ تصویر دیکھی تو غصے میں آ گئے، کھری کھری سنا دیں
سانحہ ساہیوال، حامد میر نے یہ تصویر دیکھی تو غصے میں آ گئے، کھری کھری سنا دیں

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )ساہیوال میں سی ٹی ڈی کے ” ریمنڈ ڈیوس “ نے ہنستے بستے خاندان کو پلک جھپکتے ہی اجاڑ کر رکھ دیا اور معصوم شہریوں کے جسم گولیوں سے چھلنی کر دیا تاہم تین معصوم بچے زندہ بچنے میں کامیاب ہوگئے لیکن ان کی 12 سالہ بہن اور ماں باپ جاں بحق ہو گئے ۔

واقعہ کی اطلاع ملتے ہی وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار ساہیوال پہنچے اور انہوں نے ہسپتال کا رخ کیا جہاں تینوں بچے زیر علاج تھے ، وزیراعلیٰ کی جانب سے بچوں کو پیش کیے جانے والے پھولوں کا وہاں پر انتظام کیا گیا تھا ۔وزیراعلیٰ ہسپتال پہنچے تو چھوٹا سابچہ بیڈ پر سو رہا تھا جس کی معصومیت نے قوم کے دلوں کو چیر کے رکھ دیاہے ۔

عثمان بزدار نے ہاتھوں میں پھولوں کا گلدستہ تھام رکھا ہے جو کہ اس واقعہ میں زندہ بچ جانے والے تین بہنوں کے بھائی کو پیش کیا جارہاہے جو کہ سو رہا ہے ۔ یہ تصویر حامد میر کی نظروں سے گزری تو شدید ’غصے ‘ میں آ گئے اور انہوں نے ٹویٹر پر پیغام بھی جاری کر دیا ۔

حامد میر نے یہ تصویر شیئر کرتے ہوئے پیغام لکھا کہ ”ذرا سوچئے! اگر کسی کی آنکھوں کے سامنے اسکے ماں باپ اور بہن کو قتل کر دیا جائے تو آپ اسکے ساتھ جا کر تعزیت کریں گے اسے دلاسہ دیں گے لیکن کیا آپ اس کے لئے پھول بھی لیکر جائیں گے؟ جب پتہ ہے کہ یہ مظلوم بچہ سو رہا ہے تو پھولوں کے ساتھ تصویر کھنچوانے کی کیا ضرورت تھی؟۔“

مزید : قومی