قیام امن کیلئے کے پی پولیس کی قربانیا ں ناقابل فراموش ہیں: ثنا ء اللہ عباسی

  قیام امن کیلئے کے پی پولیس کی قربانیا ں ناقابل فراموش ہیں: ثنا ء اللہ عباسی

  



صوابی(بیورورپورٹ) انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے واضح کر دیا ہے کہ خیبر پختونخوا پولیس کی مثالی امن قائم کرنے کے لئے جانوں کی قر بانیوں کو ہمیشہ یاد رکھا جائیگا دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کے پی کے پولیس نے عملی کر دار ادا کیا جس کی بدولت آج صوبے میں کافی حد تک امن قائم ہو چکا ہے ان خیالات کااظہار انہوں نے اتوار کے روز پولیس لائن شاہ منصور صوابی کے اچانک دورے اور بعد ازاں موضع جھنڈہ میں اسلام آباد کے شہید اے ایس پی سلمان آیاز خان کی برسی کے موقع پر ان کے قبر پر پھولوں کی چادر چڑھانے اور فاتحہ خوانی کے بعد صوابی الیکٹرانک میڈیا ایسو سی ایشن کے ساتھ خصوصی گفتگو کے دوران کیا ڈی آئی جی مردان ریجن شیر اکبر خان، ڈی پی او صوابی عمران شاہد اور دیگر پولیس آفسران بھی اس موقع پر موجود تھے۔ آئی جی پی ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے شاہ منصور ٹاؤن شپ میں واقع پولیس لائن اور پولیس ٹریننگ سکول کا تفصیلی معائنہ کیا انہوں نے لائن میں پولیس آفسران کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔ انہوں نے اے ایس پی اسلام آباد سلمان آیاز شہید کی قبر واقع موضع جھنڈا میں پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی کی اور ان کی شہادت کو زبر دست خراج عقیدت پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ شہداء قوم کا قیمتی سر مایہ ہے عوام کے جان و مال کے تحفظ کے لئے ان کی قر بانیاں رائیگاں نہیں جائے گی خیبر پختونخوا پولیس نے بہادری اور قر بانی کی لا زوال تاریخ رقم کی ہے ان کی جانی قر بانیوں کی وجہ سے آج صوبے میں امن ہے۔انہوں نے کہا کہ فاٹا جو کہ خیبر پختونخوا میں ضم ہو چکا ہے وہاں بھی پولیس نظام کے علاوہ تھانے اور چوکیاں قائم کی جارہی ہے اور اس پر عملدر آمد شروع ہو چکی ہے۔ اس سلسلے میں ڈی آر سی کونسل کے قیام کے بعد آج مہمند ایجنسی میں اس کی حلف وفاداری بھی ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ دوران سروس فوت ہونے والے پولیس شہداؤں کے بچوں کے لئے سو فیصد کوٹہ ہے اس کے علاوہ خیبر پختونخوا میں پولیس ویلفیئر کا بھی بہت خیال رکھا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو تحریری طور پر لکھیں گے کہ پولیس نفری میں اضافہ کیا جائے کیونکہ تعداد بڑھانے کی ضرورت ہے اسی طرح محکمہ پولیس میں اصلاحات کا عمل بھی جاری رہے گا۔منشیات کے خلاف صوبہ بھر میں کارروائیوں تیز کر دی گئی ہے سینکڑوں کی تعداد میں منشیات فروشوں کو گرفتار کیا گیا ہے اور پولیس کو منشیات اور دیگر جرائم کے حوالے سے جن چیلنجز کا سامنا ہے اس سے نمٹنے کے لئے پولیس فورس کوشاں ہے۔

ثناء اللہ عباسی

مزید : پشاورصفحہ آخر