تاجروں اور ملکی مسائل کو حل کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے، اعجاز چودھری

تاجروں اور ملکی مسائل کو حل کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے، اعجاز چودھری

  



لاہور(پ ر) پی ٹی آئی کی حکومت کی تاجروں اور ملکی مسائل کو حل کرنا اولین ترجیح ہے۔ وزیراعظم عمران خان اور ان کی ٹیم کی انتھک محنت سے ملک ترقی کی راہ پر گامزن ہو چکا ہے۔ ملکی معیشت، روپے کی قدر اور سٹاک ایکسچینج میں بہتری آئی ہے۔ان خیالات کااظہارتحریک انصاف سنٹرل پنجاب کے صدر اعجازاحمدچوہدری کی پارٹی سیکرٹریٹ میں اپنے معاون خصوصی ملک امانت کی طرف سے لاہور کے تاجران کے اعزاز میں دیئے گئے ظہرانے سے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے۔ ظہرانے میں لاہور کی تمام مارکیٹوں کے سرکردہ رہنماؤں نے شرکت کی۔ اعجاز چودھری نے کہاکہ تاجر نمائندے پی ٹی آئی کے پلیٹ فار م پر جمع ہو کر پاکستان کو مسائل سے نکالنے میں اپنا کردار ادا کریں۔ پی ٹی آئی اپنے پلیٹ فارم پر تاجر کمیونٹی کو منظم اور فعال کرے گی۔ اسحاق ڈار نے مہنگے ترین قرضے حاصل کئے۔ اسحاق ڈار کے لئے مہنگے ترین قرضے ہر سال واپس کرنے ہیں۔ پی ٹی آئی کی حکومت ایکسپورٹ میں اضافہ اور امپورٹ میں کمی واقع ہوئی ہے۔ تجارتی خسارے میں کمی واقع ہوئی ہے۔

انہوں مزید کہاکہ پی ٹی آئی حکومت نے پہلے سال دس بلین ڈالر قرضہ واپس کیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان پوری دیانتداری سے ملک وقوم کو مسائل سے نکالنے کے لئے کوششیں کررہے ہیں۔ تاجربرادری ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں۔ تاجربرادری ملک کی ترقی میں اہم کردار ہے۔ سزا یافتہ مجرم نے بیمار ی کی آڑ میں بیرون ملک سیاست شروع کردی ہے۔ شریف خاندان نے ملک کو بحرانوں میں دھکیلنے میں کوئی کسرباقی نہیں چھوڑی۔ ملک آج جن بحرانوں اور مسائل کا شکار ہے اس کا ذمہ داری شریف فیملی پر عائد ہوتی ہے۔ ملک دیوالیہ ہوچکا تھا پی ٹی آئی کی حکومت نے ملک کو دیوالیہ ہونے سے بچایا ہے۔ظہرانے سے ملک امانت علی اور شبیرسیال نے بھی خطاب کیا۔ جبکہ عثمان ملک، عمران بشیر، ملک زمان نصیب، عظمت شاہ، چوہدری قدیر، ملک کلیم، مطیع الرحمان، لالہ یاسر، راجہ حسن اختر، خرم علی سندھو، ملک محمد سلیم، محمد عمران انجم، عبدالرؤف نیازی، سیف الرحمان، محمد طارق جاوید، عثمان عالم، ڈاکٹر عرفان عارف،ریحان بٹ، لیاقت جٹ، حافظ رضوان جٹ، طارق ہاشمی، ملک طاہر، میاں شہباز، صدام اطہر خان،اعجازچوہدری، شبیرچوہدری،فرحان راجہ، عاصم شفیق، میاں محمود احمدسمیت کثیر تعداد میں تاجر نمائندے موجود تھے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1