مقبوضہ کشمیر، کرفیو کو 168روز مکمل، اودھم پور میں 10بچے جاں بحق، بھارتی وزراء کے دورے کیوجہ سے وادی میں پابندیاں مزید سخت

مقبوضہ کشمیر، کرفیو کو 168روز مکمل، اودھم پور میں 10بچے جاں بحق، بھارتی وزراء ...

  



سرینگر(نیوزایجنسیاں) مقبوضہ کشمیر میں آج مسلسل 168ویں روز بھی فوجی محاصرے اور انٹرنیٹ پر پابندی کی وجہ سے وادی کشمیر اور جموں خطے کے مختلف علاقوں میں لوگوں کو شدید مشکلات سامنا رہا۔ کشمی رمیڈیا سروس کے مطابق انٹرنیٹ سروس کی بحالی اور براڈ بینڈ سروسزکی فراہمی کے لیے مختلف مراکزکے قیام کے بارے میں قابض حکام کے اعلانات محض دھوکہ ثابت ہوئے ہیں کیونکہ مقبوضہ علاقے کی انتظامیہ نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ وادی کشمیر کے دس اضلاع میں سے کم از کم آٹھ اضلاع میں انٹرنیٹ مسلسل معطل ہے۔بھارتی اخبار نے مقبوضہ کشمیر کے پرنسپل سیکریٹری شیلین کبرا کے جاری کردہ نوٹیفکیشن کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ سری نگر، بڈگام، گاندربل، بارہمولہ،اسلام آباد، کولگام، شوپیاں اور پلوامہ اضلاع میں موبائل انٹرنیٹ معطل رہے گا۔دریں اثنا قابض حکام نے بھارتی وزرا کے ایک گروپ کے دورے کے موقع پر سیکیورٹی کے نام پرمقبوضہ کشمیر میں پابندیاں مزید سخت کردی ہیں۔ وادی کشمیر اور جموں خطے میں بھارتی فورسزگاڑیوں کوجگہ جگہ روکتی ہیں اور مکمل جانچ پڑتال کررہی ہیں جبکہ راہ گیروں کو آزادانہ طور پر نقل وحرکت کی اجازت نہیں ہے۔ مقبوضہ کشمیر کے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل پولیس نے بتایا کہ انہوں نے بھارتی وزرا کی آمد اور روانگی میں آسانی کے لئے سکیورٹی کے فول پروف انتظامات کیے ہیں۔ ادھر ضلع اودھم پور میں دس بچے پراسرار ہلاک ہوگئے جبکہ6کی حالت تشویشناک ہے۔ حکام موت کی وجوہات بتانے سے گریز کر رہے ہیں۔گاؤں رام نگر میں ان بچوں کو شدید بخار، قے اور پیشاب کی مقدار کم ہونے کی شکایت ہوئی تھی، 6بچوں کوپنجاب اور جموں کے ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے۔

کشمیر

مزید : صفحہ اول