ایف اے ٹی ایف کا بیجنگ اجلاس پاکستان کیلئے اہم، امریکہ بتائے کیا مدد کر سکتا؟ شاہ محمود

    ایف اے ٹی ایف کا بیجنگ اجلاس پاکستان کیلئے اہم، امریکہ بتائے کیا مدد کر ...

  



اسلام آباد (این این آئی)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سوال کیاہے کہ امریکہ بتائے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے حوالے سے پاکستان کی تسلی اور مدد کیلئے کیا کرے گا؟ نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق شاہ محمود قریشی نے ایف اے ٹی ایف میں پاکستان کی مدد کے معاملے پر گیند امریکہ کی کورٹ میں پھینک دی ہے۔انہوں نے امریکی حکومت سے سوال کیا ہے کہ چین کے شہر بیجنگ میں ہونیوالے ایف اے ٹی ایف کے آئندہ اجلاس میں امریکہ کی کیا حکمت عملی ہوگی؟ اور امریکا بیجنگ اجلاس کے حوالے سے کیا اقدامات کرے گا؟ جس سے پاکستان کی تسلی اور مدد ہوسکے۔شاہ محمود قریشی نے کہاکہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ سال ستمبر میں عمران خان سے ملاقات میں کہا تھا کہ پاکستان کی مدد کرنی چاہیے لہٰذا ایف اے ٹی ایف کے حوالے سے بیجنگ میں ہونے والا آئندہ اجلاس پاکستان کے لیے بہت اہم ہے۔وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ ایف اے ٹی ایف پر حکومت کی 10 ماہ کی کارکردگی کو پچھلے 10 سال کی کارکردگی سے موازنہ کرلیں، اگر آپ موازنہ کریں گے تو اندازہ ہوگا کہ ہم نے کتنی سنجیدگی سے ایف اے ٹی ایف کے مطالبات پورا کرنے کے لیے اقدامات کیے ہیں۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے ایف اے ٹی ایف پر کافی اقدمات کیے ہیں۔دوسری طرف ٹوئٹر پیغام میں شاہ محمود نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر امریکہ، عمان، سعودی عرب، ایران اور قطر کا دورہ کیا اور وزرائے خارجہ کو مشرق وسطیٰ میں کشیدگی کے خاتمے پر پاکستانی کوششوں سے آگاہ کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ کہ پاکستان خطے میں امن کیلئے پرعزم ہے اپنے دورے میں سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ سے بھی ملاقات کی ہے جس میں مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت حل کرنے پر زور دیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت نے کشمیریوں کا قتل عام نہ روکا تو خاموش بیٹھنا مشکل ہو گا۔ نہتے شہریوں پر بھارتی افواج کے حملوں میں شدت آرہی ہے۔ سلامتی کونسل مبصر مشن کی واپسی کے لئے بھارت پر دباؤ ڈالے۔

شاہ محمود

مزید : صفحہ اول