ایف اے ٹی ایف مذاکرات میں شرکت،پاکستانی وفدچین پہنچ گیا

ایف اے ٹی ایف مذاکرات میں شرکت،پاکستانی وفدچین پہنچ گیا

  



بیجنگ(آن لائن)پاکستانی وفد فنانشل ایکشن ٹاسک فورس سے 3روزہ مذاکراتی اجلاس میں شرکت کیلئے چین پہنچ گیا۔وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور حماد اظہر پاکستانی وفد کی قیادت کررہے ہیں، ایف اے ٹی ایف کا 3روزہ مذاکراتی اجلاس 21 جنوری سے 23 جنوری تک چین کے دارالحکومت بیجنگ میں ہوگا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان کے بیجنگ میں ایف اے ٹی ایف حکام سے 21 جنوری سے براہ راست مذاکرات ہوں گے۔پاکستانی وفد میں نیشنل کانٹر ٹیررازم اتھارٹی (نیکٹ)، کسٹمز، اسٹیٹ بینک، فنانشل مانیٹرنگ یونٹ (ایف ایم یو)وزرات خارجہ اور وزرات داخلہ کے حکام شامل ہیں۔ پاکستانی وفد مذاکرات سے قبل 20 جنوری کو باہمی میٹنگ بھی کرے گا۔خیال رہے کہ ایف اے ٹی ایف نے گذشتہ ماہ دسمبر میں پاکستان کی جانب سے پیش کی جانے والی رپورٹ کے جواب میں 150 سوالوں کے جواب 8 جنوری 2020 تک طلب کیے تھے۔ان سوالات میں پاکستان میں مدرسوں سے متعلق زیادہ وضاحتیں طلب کی گئی تھیں جب کہ منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے سے متعلق پیش رفت سمیت دہشت گردوں پر قائم مقدمات کا ریکارڈ بھی طلب کیا گیا تھا۔ذرائع کے مطابق پاکستان نظر ثانی رپورٹ 8 جنوری کو ایف اے ٹی ایف کو بھجوا چکا ہے جس کے مطابق پاکستان نے دہشت گردوں کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ روکنے کیلئے ٹھوس اقدامات کیے ہیں۔فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے ارکان کی تعداد 37 ہے جس میں امریکا، برطانیہ، چین، بھارت اور ترکی سمیت 25 ممالک، خلیج تعاون کونسل اور یورپی کمیشن شامل ہیں۔تنظیم کی بنیادی ذمہ داریاں عالمی سطح پر منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے کے لیے اقدامات کرنا ہیں۔

پاکستانی وفد

مزید : صفحہ اول