زرعی ترقی کیلئے جامع حکمت عملی کی ضرورت ہے، بزنس مین پینل

  زرعی ترقی کیلئے جامع حکمت عملی کی ضرورت ہے، بزنس مین پینل

  



اسلام آباد (اے پی پی) وفاق ہائے ایوان صنعت و تجارت پاکستان کے بزنس مین پینل(بی ایم پی) کے فیڈرل سیکرٹری جنرل احمد جواد نے کہا ہے کہ2020ء میں زرعی شعبہ کی ترقی کیلئے جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات کی ضرورت ہے، تاکہ شعبہ کو مراعات فراہم کرکے جی ڈی پی میں اضافہ کیا جا سکے۔ آئندہ سالوں میں جی ڈی پی کی 8 فیصد شرح نمو کے حصول کو یقینی بنانے کیلئے زرعی شعبہ پر خصوصی توجہ کی ضرورت ہے۔ احمد جواد نے ”اے پی پی“ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ زرعی شعبہ کی صوبوں کو منتقلی کے بعد اس کی کارکردگی متاثر ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ چند سالوں کے دوران صوبوں کی جانب سے زرعی پالیسی کی عدم تشکیل اورمنصوبہ بندی سے شعبہ کی کارکردگی پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔ احمد جواد نے کہا کہ آبپاشی کے پانی کی دستیابی میں بہتری سے پیداوار کو بڑھایا جاسکتا ہے جبکہ کھادوں کی قیمتوں میں کمی اور موسمیاتی تبدیلیوں کے اثرات کو کم سے کم کرنے کے اقدامات سے بھی زرعی شعبہ کی کارکردگی میں اضافہ کیا جاسکتا ہے۔ احمد جواد نے بتایا کہ گذشتہ 19 سال سے شعبہ کی کارکردگی میں کمی کا رجحان ہے اس لئے شعبہ کی ترقی کیلئے ضروری ہے کہ جامع حکمت عملی کے تحت اقدامات کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ کھاد کی قیمت میں اضافہ سے کاشتکار متناسب کھاد استعمال نہیں کر رہے جس سے پیداوار کم ہورہی ہے۔ احمد جواد نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ تمام بڑی فصلوں کی پیداوار میں کمی ہورہی ہے جو باعث تشویش ہے اس لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ زرعی مداخل کی قیمتوں میں کمی اور مراعات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ اجناس کی قیمتوں میں اضافہ کی ضرورت ہے تاکہ عام کاشتکار کے معیار زندگی کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ دیہی معیشت کی ترقی کو بھی یقینی بنایا جاسکے۔

مزید : کامرس