پنجاب کی 10فیصد جیلو ں میں ایمبولینس کی سہولت ہی میسر نہیں

پنجاب کی 10فیصد جیلو ں میں ایمبولینس کی سہولت ہی میسر نہیں

  



اسلام آباد (آئی این پی) ملک بھر کی جیلوں میں قیدیوں کی طبی حالت کے حوالے سے مزید تفصیلات سامنے آگئیں،اسلام آباد ہائی کورٹ میں جمع کرائی گئی حکومتی رپورٹ میں جیلوں میں طبی سہولیات کی کمی کی بھی نشاندہی۔رپورٹ کے مطابق 245 جیل قیدیوں کی طبی بنیادوں پر ضمانت کی درخواستیں محکمہ داخلہ میں زیر التوا،سندھ کی 232،پنجاب کے قیدیوں کی 12 ضمانت کی درخواستیں زیر التوا ہیں،طبی سہولیات نہ ملنے کچھ قیدی جسمانی طور پر معذور ہوجاتے ہیں، جیل ہسپتالوں میں الٹرا ساؤنڈ،آکسیجن سلنڈرز،ای سی جی مشینز،لیبارٹریز کی کمی،پنجاب کی 10 فیصد جیلوں میں ایمبولینس کی سہولت میسر ہی نہیں،رپورٹ کے مطابق بلوچستان کی جیلوں کے لیے صرف چار ایمبولینسز موجود، ملک بھر کی جیلوں میں سے صرف خیبر پختونخوا میں دو دانتوں کے ڈاکٹر موجود،ملک کی 96 جیلوں میں قید 73 ہزار سے زائد قیدیوں کے لیے صرف 193 میڈیکل آفیسرز،جیلوں میں 107 میڈیکل آفیسرز کی آسامیاں خالی ہیں،ملک بھر کی جیلوں میں 65 فیصد سے زیادہ قیدی سزا یافتہ ہی نہیں۔

جیل / ایمبو لینس

مزید : صفحہ آخر